محکمہ موسمیات نے رمضان میں شدید گرمی کی پیشگوئی کردی
31 مارچ 2018 (17:52)

اسلام آباد: محکمہ موسمیات کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر غلام رسول نے کہا ہے کہ مارچ میں سندھ میں گرمی کے کئی سال کے ریکارڈ ٹوٹ گئے ہیں، اگلے 2مہینے موسم معمول سے زیادہ گرم اور خشک رہنے کا امکان ہے، منگلا اور تربیلا ڈیم لیول پر ہیں، گلیشیئرز کا پانی ڈیموں میں آنے کے باوجود تمام ضرورتیں پوری نہیں ہوں گی۔ہفتہ کو ڈی جی میٹ ڈاکٹر غلام رسول نے بتایا کہ مارچ میں سندھ میں گرمی کے کئی سال کے ریکارڈ ٹوٹ گئے، مئی اور جون میں معمول سے زیادہ گرمی پڑنے کا امکان ہے۔

ڈی جی میٹ نے کہا کہ آئندہ دو ماہ معمول سے زیادہ گرم اور خشک رہنے کا امکان ہے جبکہ اپریل اور مئی میں بارشیں بھی معمول سے کم ہونے کا امکان ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ گرمی زیادہ ہونے کے باعث پانی کی طلب میں اضافہ ہو گا۔ماہ رمضان متوقع طور پر مئی میں آرہا ہے جس سے اس بات کا قوی امکان ہے کہ ماہ مقدس میں گرمی کی شدت کا احساس بھی زیادہ ہو گا ۔ تک ایسا ہی موسم رہا تو شدید گرمی کا موسم رہے گا ۔، اپریل میں برف پگھلنے اور مئی میں گلیشیئرز پگھلنے سے ڈیموں میں کچھ پانی آئے گا لیکن گلیشیئرز کا پنی ڈیموں میں آنے کے باوجود تمام ضرورتیں پوری نہیں ہوں گی۔ڈی جی میٹ ڈاکٹر غلام رسول نے کہا کہ اپریل اور مئی کپاس کی کاشت کا سیزن ہے، منگلا اور تربیلا ڈیم ڈیڈ لیول پر ہیں۔


ای پیپر