پاکستان میں اب سونا ،چاندی ہیرے ،جواہرات کا کاروبار کرنے والوں کی خیر نہیں!
31 جنوری 2020 (18:45) 2020-01-31

اسلام آباد: پاکستان نے ایف اے ٹی ایف کے مطالبے پر 6 شعبوں کے لیے نئے سیکٹر ریگولیٹرز کا تقرر مکمل کر دیا۔تفصیلات کے مطابق فنانشل مانیٹرنگ کے نئے سیکٹر ریگولیٹرز کے لیے رولز کی تیاری بھی شروع کر دی گئی ہے سیکٹر ریگولیٹرز کی تعیناتی رپورٹ ایف اے ٹی ایف سیکریٹریٹ کو ارسال کر دی گئی، اس رپورٹ پر پیرس میں 16 فروری سے شروع ہونے والے ایف اے ٹی ایف اجلاس میں غور کیا جائے گا.

نجی ٹی وی کے مطابق پاکستان نے ایف اے ٹی ایف ایکشن پلان پر عمل درآمد مثر بنانے کے لیے اقدامات تیز کر دیے ہیں، منی لانڈرنگ اور ٹیرر ازم فناسنگ کی روک تھام سے متعلق اقدامات جاری ہیں، اس سلسلے میں ایف بی آر سونا ، چاندی، پلاٹینیم، ہیرے جواہرات کے کاروبار کو بھی مانیٹر کرے گا۔

سکیٹر ریگولیٹرز میں ایس ای سی پی کو چارٹرز اکانٹس کا سپروائزی ریگولیٹر، وزارت قانون کو بار کونسلز وکلا، قانونی مشیروں، نوٹری پبلک کے لیے سیکٹر ریگولیٹر مقرر کیا گیا، قومی بچت اسکیموں میں سرمایہ کاری کی جانچ پڑتال کے لیے بھی ریگولیٹری عمل شروع کر دیا گیا، اسکیموں کی سرمایہ کاری کی جانچ پڑتال کی ذمہ داری نجی بینک کے سپرد کی جائے گی۔


ای پیپر