Accountability court, NAB, Khawaja Asif, physical remand, PML-N, MNA
31 دسمبر 2020 (14:46) 2020-12-31

لاہور: احتساب عدالت نے رکن قومی اسمبلی اور سابق وفاقی وزیر خواجہ آصف کو 14 روز کیلئے جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کرتے ہوئے انہیں 14 جنوری کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیدیا۔

یاد رہے کہ احتساب عدالت پیشی کے بعد خواجہ آصف نے کہا کہ انہیں صرف اور صرف عمران خان کے کہنے پر گرفتار کیا گیا ، لیکن وہ گرفتاری سے گھبرانے والے نہیں۔ لیگی رہنما نے مزید بات کرنے کی کوشش کی تو پولیس نے روک دیا۔

دوسری جانب معاون خصوصی شہباز گل کا کہنا تھا کہ خواجہ آصف اپنی لیڈر شپ کے نقش قدم پر چلتے ہوئے منی لانڈرنگ سے حرام کا پیسہ حلال کرنے کی ناکام کوشش کرتے رہے۔ انہوں نے کہا کہ اقامہ ہو یا جعلی ٹی ٹی ساری کہانی جانی پہچانی ہے۔

معاون خصوصی نے خواجہ آصف پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اُن کے گرو نواز نے جعلی قطری خط استعمال کیا تو چیلے خواجہ آصف نے جعلی لبنانی ملک سے چھوٹا تنخواہ کا معاہدہ اور بوگس ایکسپورٹ بل پیش کئے۔

گزشتہ روز میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وفاقی وزیر نے کہا کہ ان کی گرفتاری سے نواز شریف کو کمزور کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ انہوں نے حکومت پر انتقامی سیاست کا الزام بھی عائد کیا۔

اسلام آباد احتساب عدالت میں پیشی پر صحافی نے لیگی رہنما سے سوال کیا آپ کو کس نے کہا تھا کہ نواز شریف کو چھوڑ دیں کیسز ختم ہو جائیں گے۔ جس پر خواجہ آصف بولے ہم سب کو دو ڈھائی سال سے کہا جا رہا ہے ، جب سے میاں صاحب کو نااہل کیا گیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ دو سال سے پارٹی توڑنے کی کوشش ہو رہی ہے۔ مجھے چارج شیٹ دی گئی کہ میرے اثاثے بڑھ گئے ہیں ، لیکن ابھی تک نیب نے کوئی تفتیش نہیں کی۔


ای پیپر