US,Omar Sheikh,danyal pearl,assassination,American,Pakistan
31 دسمبر 2020 (11:00) 2020-12-31

واشنگٹن: امریکہ نے کہا ہے کہ پاکستان میں امریکی صحافی ڈینیل پرل کے قتل میں ملوث عمر شیخ کو انصاف سے بچ نکلنے کی اجازت کسی صورت نہیں دی جائیگی ۔

امریکی سٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کی طرف سے جاری کئے  جانے والے ایک بیان میں امریکی اٹارنی جنرل جیفری روسین نے کہا ہے کہ ہم عمر شیخ اور اس کے ساتھی ملزمان کو سزا دلوانے کیلئے کوششوں پر پاکستان کی تعریف کرتے ہیں لیکن اب پاکستانی عدالت کی طرف سے عمر شیخ کی سزا کو تبدیل کرنے اور پھر اس کا رہائی کا حکم دینا پوری دنیا میں دہشت گردی سے متاثرین کیلئے توہین کا درجہ رکھتا ہے۔

 انہوں نے کہا کہ پاکستان کی طرف سے سپریم کورٹ میں دائر اپیل کے ذریعے اس سزا کو بحال رکھنے کی کوشش کی جا رہی ہے اور امید ہے کہ پاکستان اس عمل میں کامیاب ہوگا۔ہم پاکستان میں اس کیس پر ہونے والی کسی بھی پیش رفت پر مسلسل نظر رکھ رہے ہیں  اور اس کے ساتھ ساتھ امریکہ امریکی صحافی ڈینیل پرل کی بطور صحافی خدمات کا احترام کرتا ہے اور ان کے اہل خانہ کو انصاف کے حصول تک مکمل حمایت جاری رکھے گا۔

یاد رہے کہ کراچی ہائیکورٹ کی طرف سے 24 دسمبر کو امریکی صحافی ڈینیل پرل کے قتل اور اغوا ملوث ملزم احمد عمر سعید شیخ کی حراست کو کالعدم قرار دیتے ہوئے چار ملزمان کی طرف سے سزا کیخلاف دائر چار اپیلوں میں سے تین قبول کر لی تھیں۔جبکہ عمر سعید شیخ کی سزائے موت کو سات سال قید میں تبدیل کر د یا تھا۔

امریکی اخبار وال سٹریٹ جرنل کے جنوبی ایشیا میں بیورو چیف 38 سالہ ڈینیل پرل کو جنوری 2002 میں اغوا کے بعد قتل کر دیا گیا تھا۔اس کے بعد امریکی صحافی کو ذبح کرنے کی ویڈیو امریکی قونصل خانے بھجوائی گئی تھی جس کی بنیا د عمر سعید شیخ سمیت چار افراد کی حراست عمل میں آئی تھی۔ 


ای پیپر