ن لیگ میں بغاوت کھل کر سامنے آگئی
کیپشن:   Source : Yahoo
31 اگست 2018 (19:16) 2018-08-31

اسلام آباد:مسلم لیگ ( ن) کے ضمنی انتخابات میں حلقہ این اے 53اسلام آباد سے امیدوار ساجد عباسی نے کہا ہے کہ عام انتخابات میں سابق وزیرمملکت ڈاکٹر طارق فضل چوہدری کی ناہلی وجہ سے ( ن) لیگ وفاقی دارالحکومت کی تینوں نشستوں پرشکست سے دوچار ہوئی، اگر پارٹی نے این اے 53سے طارق فضل چوہدری کو ٹکٹ دینے کی کوشش کی تو بھرپور مخالفت و مزاحمت کرتے ہوئے آزاد حیثیت میں الیکشن لڑوں گا۔

طارق فضل چوہدری قومی سطح کا لیڈر نہیں وہ صرف ایک حلقہ سے ایم این اے رہا۔ جمعہ کو صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے ساجد عباسی نے کہا کہ ڈاکٹر طارق فضل چوہدری کا حلقہ انتخاب این اے 52 ہے اور حلقہ این اے 53سے ان کا کوئی تعلق نہیں، یہاں کا ٹکٹ پارٹی ورکرز کا حق ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر طارق فضل قومی سطح کے لیڈر نہیں وہ ایک حلقے کے ایم این اے رہے ہیں، پارٹی لیڈر شپ نے مجھے ٹکٹ دینے کےلئے گرین سگنل دیا تھا جس پر میں نے اپنے کاغذات جمع کرائے ہیں، اگر کسی مصلحت یا دباﺅ کے تحت پارٹی قیادت نے ڈاکٹر طارق کو ٹکٹ دینے کی کوشش کی تو ہم ہر سطح پر اس کی مخالفت اور مزاحمت کریں گے ۔

آزاد حیثیت میں الیکشن لڑنے کا اعلان بھی کر دوں گا، کسی صورت اپنے حق سے دستبردار نہیں ہوں گا۔ انہوں نے کہا کہ میں تیس سال سے مسلم لیگ ( ن) کے ساتھ وابستہ ہوں اور اسلام آباد کی مسلم لیگ ( ن) کا سب سے سینئر کارکن ہوں، ڈاکٹر فضل چوہدری تو سال 2000میں مسلم لیگ ( ن) میں شامل ہوئے اور ڈاکٹر طارق فضل کی نااہلی کی وجہ سے مسلم لیگ ( ن) اسلام آباد کی تینوں نشستوں پر شکست سے دوچار ہوئی، اگر پارٹی قیادت نے ایسے شخص کو پھر آگے لانے کی کوشش کی تو اس سے پارٹی کو ہی نقصان ہو گا۔


ای پیپر