منی لانڈرنگ کی سرپرستی اور دنیا
30 ستمبر 2020 (12:41) 2020-09-30

بھارت کا شروع سے وطیرہ ہے کہ ہمسایہ ممالک کو دہشت گردکہہ کر بدنام کیا جائے عام سیاستدان ہوں یا ایوانِ اقتدار میں براجمان وزراسے لیکر وزیرِ اعظم ہمیشہ ہمسایہ ملکوں کوشدت پسند اور دہشت گردی کے محور قرار دیتے ہیں کچھ مصلحتوں اور مفادات کی وجہ سے اقوامِ عالم نے بھی بھارت کی طرفداری کی مگر بی جے پی نے تو اقتدار میں آکردہشت گردی کا فخریہ اعتراف کرنا شروع کردیا ہے جس کا نوٹس نہ لیناعالمی طاقتوں کی جانبداری کے سواکچھ نہیں دہشت گرد تنظیم آرایس ایس کے ایجنڈے سے دنیا ششدر ہے یہ تنظیم وقفے وقفے سے بھارت کے طول وعرض میں ہونے والے فسادات میں پیش پیش ہے فسادات میں اب تک سینکڑوں کی تعداد میں مسلمان،سکھ،عیسائی اور دلت ماردیے گئے ہیں دہلی میں شہریت ایکٹ کے خلاف ہونے والے مظاہروں اور دھرنوں سے آگ بگولا جنونی ہندوؤں نے پچاس سے زائد مسلمان گاجر مولی کی طرح کاٹ کر رکھ دیے ستم ظریفی یہ کہ امن کے قیام کی ذمہ دارپولیس خود بلوائیوں کی سہولت کار بنی رہی ستم ظریفی یہ کہ اِس تنظیم کو جنونی ہندو فسادات کے لیے بھاری رقوم چندہ دیتے ہیں جو اسلحہ خریدنے اور بلوائیوں کی تربیت پر خرچ ہوتا ہے بدلے میں چندہ دینے والے اِداروں کو یہ تنظیم تحفظ دیتی ہے۔

امریکہ آجکل بھارت پر ریشہ خطمی ہے چین سے مخاصمت کی بنا پر مقابلے لیے کے اُس کی پیٹھ ٹھونکی جارہی ہے جس کی وجہ سے نہ صرف خطے کے امن کو خطرہ ہے بلکہ غیر قانونی رقومات کے کاروبار کی حوصلہ افزائی ہورہی ہے جسے کسی صور ت سراہا نہیں جا سکتا گزشتہ دنوں امریکی وزارتِ خزانہ کی خفیہ فائلوں سے اس امر کا انکشاف ہوا ہے کہ بھارت کے چوالیس بینکوں نے 2011 سے 2017کے سات برسوں میں 3201 غیر قانونی ٹرانزایکشن کے ذریعے ایک ارب تریپن کروڑ ڈالر کی منی لانڈرنگ کی تقریباََ تمام تربھارتی بینک مشکوک سرگرمیوں میں ملوث ہیں نوادرات کی اسمگلنگ میں کئی بھارتی اِدارے ملوث ہیں فنانشل کرائمز انفورسمنٹ کی رپورٹ میں غیر قانونی لین دین کا سارا کچاچٹھا موجود ہے دہشت گرد مالی فراڈ سونے اور ہیروں کی صورت میں کرتے ہیں کرکٹ کی آ ڑمیں منی لانڈرنگ ہوتی ہے اب یہ دنیا کی غیر جانبداری کا امتحان ہے کہ شواہد کے باوجود بھارت جیسی ہندو ریاست کے خلاف پابندیا ں لگائی جاتی ہیں یا نرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے  آنکھیں بند رکھی جاتی ہیں اگر 

نظر انداز کیا جاتا ہے تو عالمی اداروں کی ساکھ پر سوال اُٹھیں گے جس کی بنا پر چھوٹے اور ترقی پذیر ممالک کا اعتماد متزلزل ہوگا۔

 بھارت نے دہشت گردی کی سرکاری طور پر سرپرستی شروع کر رکھی ہے تاکہ علاقائی طاقت بننے کے لیے خطے کے دیگرممالک کو عدمِ استحکام کا شکار کیا جا سکے بھارتی ریٹائرڈ میجر گورو آریا کا پاکستان میں دہشت گردی کے لیے فنڈنگ کا انکشاف اور نیوی کے حاضرسروس گرفتارکمانڈرکلبھوشن کی طرف سے دہشت گردی کا اعتراف اِس کا ثبوت ہے کہ بھارت ایک ایسی بد طینت ریاست ہے جوبرائی کی محورہے نریندرمودی کا ڈھٹائی سے سلامتی کونسل کی مستقل رُکنیت کی بات کرنا اقوامِ عالم کا منہ چڑانے کے مترادف ہے جو کشمیر کے متعلق عالمی اِدارے کی قراردادوں کو خاطر میں نہیں لاتا وہ مستقل رُکنیت کے حصول کی بات کرے اور دنیا سُن لے حیرانگی ہے گرے لسٹ سے نکلنے کے لیے پاکستان نے غیر قانونی رقوم کی منتقلی روکنے کے لیے اہم قوانین بنائے ہیں اہم ملکی اِداروں کو دوسرے ممالک سے معلومات کے تبادلے سمیت کاروائی کرنے کے لیے وسیع اختیارت دیے ہیں لیکن بھارت منی لاندرنگ کے ڈھیروں ثبوت کے باوجود قانون سازی تو کُجا مذمت کرنے سے بھی گریزاں ہے جسے بے نقاب کرنے کے لیے پاکستان کو بڑے پیمانے پر اقدامات کرنا ہونگے تاکہ دنیا بھارت کی دوعملی سے آگاہ ہو سکے بھارت کی فلم نگری میں منشیات کے کاروبار اور بھاری رقوم کی غیر قانونی منتقلی کوئی راز نہیں کئی اداکاراور اداکارئیں اعتراف کرچکی ہیں اور ملوث افراد کی نشاندہی بھی،لیکن آج تک کوئی کاروائی نہیں کی گئی اعتراف اور نشاندہی میں عالمی اداروں کو کاروائی کے لیے باقاعدہ جواز کا فراہم کرتے ہیں۔

منی لانڈرنگ کے حوالے سے بھارت  پہلی باربے نقاب نہیں ہوامگرپہلی بار بڑے پیمانے پر عالمی اداروں کے ہاتھ ثبوت لگے ہیں اب یہ عالمی قوتوں کا امتحان ہے کہ بھارت کے خلاف نتیجہ خیز اقدامات کریں تاکہ بھارت اپنے ہمسایہ ممالک کو غیر مستحکم کرنے کے لیے ٹخریب کاری اور شدت پسندی کو بطور ہتھیار استعمال نہ کر سکے اِس امر سے تو معمولی سی فہم و فراست رکھنے والے بھی آگاہ ہیں کہ پاکستان کے ساتھ افغانستان کی سرحد پر کلچرل سرگرمیوں کی آڑ میں بھارت کی بدنام ایجنسی را دہشت گردوں کو تربیت دیتی ہے یہ دہشت گرد آمدورفت میں نرمی کی بنا پر سرحدپار کرتے ہیں اور بلوچستان اور کے پی کے میں تخریبی کاروائیاں کرنے کے بعدمحفوظ طریقے سے واپس چلے جاتے ہیں این ڈی ایس سے ملکر را خطے کو غیر مستحکم کرنے کی خاطر بھاری رقوم تقسیم کر رہی ہے بھارت کے قومی سلامی کے مشیر اجیت دوول کا بی ایل اے کی سرپرستی اور اسلحے کی فراہمی کادعویٰ موجود ہے نریندمودی کی بلوچستان کے علحدگی پسندوں کی مالی سرپرستی کی بڑھک زرائع ابلاغ نے ساری دنیا تک پہنچا دی ہے پھر بھی بھارت پابندیوں سے ہے کیوں محفوظ ہے؟ کہیں دنیا نے مسلم ممالک کوشکست و ریخت سے دوچار کرنے کے لیے منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کو ہتھیار تو نہیں بنا رکھا؟ اگر ایسی بات ہے تو مسلم ممالک کو متفقہ لائحہ عمل بنا کو مناسب طریقے سے تحفظات کا اظہار کرنا چاہیے بھارت منی لانڈرنگ اور دہشت گردی میں ملوث ہوکر بھی چالبازی اورمکاری سے جب امن پسندی کا دعویٰ کرتا ہے تو عالمی اِدارے کیوں تسلیم کرلیتے ہیں؟ ایف اے ٹی ایف کو چھوٹے ممالک پر دباؤ ڈالنے کی بجائے اصل برائی کے محور کے خلاف کاروائی کرنی چاہیے۔


ای پیپر