Asifa Bhutto will participate in PDM's power show in Multan today
30 نومبر 2020 (09:06) 2020-11-30

ملتان:صوفیوں کے شہر ملتان میں پی ڈی ایم کا آج پاورشو ہورہا ہے جس کے لئے تیاریاں مکمل نہ ہوسکیں جبکہ انتظامیہ نے حکومتی رٹ قائم کرتے ہوئے قلعہ کہنہ قاسم باغ سٹیڈیم کے اطراف کنٹینر لگا کر کنٹرول سنبھال لیا،کاروباری مراکز بھی بند اورگھنٹہ گھر چوک کے راستوں کو بھی رکاوٹیں کھڑی کرکے سیل کردیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطاب ملتان میں آج میٹرو اور سپیڈو بس سروس بند رہے گی جبکہ ڈپٹی کمشنر ملتان نے حکم نامہ جاری کر دیا اور کارکنوں کی پکڑ دھکڑا اور مقدمات کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

دوسری جانب پی ڈی ایم قلعہ کہنہ قاسم باغ فتح کرنے کے لیے پرعزم ہے اور آصفہ بھٹو زرداری گیلانی ہائوس سے ریلی کی صورت میں جلسہ گاہ روانہ ہوں گی۔

پاکستان مسلم لیگ (ن)کی ترجمان مریم اورنگیزیب کا کہنا ہے کہ ملتان کاجلسہ ہرصورت ہوگا،روک سکوتوروک لو،حکومت نے ہر جلسے کوروکنے کی کوشش کی اورہرجلسہ ہوا، پی ڈی ایم کااحتجاج پرامن ہے،سلیکٹڈووٹ چورٹولاجلسے روکنے کی کوشش کررہا ہے جبکہ حکومت غیرقانونی راستے اختیارکررہی ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ روزجمعیت علمائے اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کارکنوں کو ملتان پہنچنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ جلسہ ہر صورت ہو گا۔

پی ڈی ایم اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ حکومت ریاستی دہشتگردی کرکے تشدد کا راستہ اپنانے تو کارکن بھی ڈنڈے اٹھالیں، رکاوٹیں توڑ ڈالیں اور ہر قیمت پر جلسہ گاہ پہنچیں۔

سربراہ پی ڈی ایم نے وارننگ دیتے ہوئے کہا کہ اگر حکومت نے ڈنڈا استعمال کیا تو ہماری طرف سے بھی بھر پور جواب دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کوئی طاقت پی ڈی ایم جلسے کو نہیں روک سکتی، ہر طرح کی صورت حال سے نمٹنے کے لیے حکمت عملی تیار کر لی ہے۔ لاقانونیت کی اجازت نہیں دیں گے۔

فضل الرحمان نے حکومت پر واضح کیا کہ اگر انہیں جلسہ کرنے کی اجازت نہ دی گئی تو ہر جگہ جلسہ گاہ بن جائے گا۔ انہوں نے کہا تھا کہ اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے جنوری میں لانگ مارچ کا اعلان کیا گیا تھا لیکن شاید حکومت جلد چاہتی ہے۔

مولانا فضل الرحمان نے اپنے کارکنوں کو جلسہ گاہ پہنچنے کی ہدایت کردی ہے جبکہ مریم نواز بھی جلسہ گاہ پہنچیں گی۔


ای پیپر