آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع آئین میں رہتے ہوئے کی گئی ہے،شاہ محمود قریشی
30 نومبر 2019 (23:29) 2019-11-30

ملتان:وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع آئین میں رہتے ہوئے کی گئی ہے۔ آرمی چیف کو خطے کی صورتحال کے باعث توسیع دی گئی ہے۔جنرل قمر جاوید باجوہ کا موجودہ صورتحال میں اہم کردار ہے۔ماضی کی حکومتوں کے برعکس ہماری حکومت نے آرمی چیف کے معاملے پر عدالتی فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا عدالتی تحریری فیصلہ کا انتظار ہے،وزیر اعظم آرمی چیف کو 3 سال توسیع دینا چاہتے ہیں۔قانون سازی صرف موجودہ حکومت کا مسئلہ نہیں ہے امید ہے اپوزیشن اپنا کردار ادا کریگی۔قانون سازی کے بعد آرمی چیف کی توسیع بارے صورتحال واضح ہوگی۔

انہوں نے کہا صدر ٹرمپ کے دورے کے بعد طالبان مذکرات دربارہ شروع ہونگے،افغانستان میں امن کے قیام اور بھارت سے مسائل اور خطے کی صورتحال سب کے سامنے ہے۔ ہندوستان کبھی بھی ایڈونچر کرسکتا ہے لیکن ہماری مسلح افواج انڈین عزائم سے نمٹنے کیلئے ہر وقت تیار ہیں۔ انہوں نے کہا دھرنے کی وجہ سے کشمیر کاز کو نقصان پہنچا۔دھرنے کے باعث کشمیر سے نظر ہٹ گئی۔ کشمیری آج بھی پاکستان کی طرف دیکھ رہا ہے۔

میڈیا سے درخواست ہے کشمیر سے نظر مت ہٹائیں،انہوں نے کہا آج سری لنکا اور قطر کے دورہ پر روانہ ہو رہا ہوں۔اس دورے میں ترکی، انڈونیشا، ملائیشیا اور قطری وزیر خارجہ سے ملاقات کرونگا- سری لنکا میں سری لنکا کی نئی حکومت کو مبارک باد دینے کے ساتھ کشمیر کا مقدمہ بھی پیش کرونگا۔انہوں نے کہا ہماری حکومت کی پالیسی کی بدولت 1965ءکے بعد پہلی مرتبہ مسئلہ کشمیر کو زیر بحث لایا گیا۔ کشمیر ایک خطہ کا نہیں بلکہ عالمی مسئلہ بن چکا ہے۔

انہوں نے کہا اسلامی ممالک کی تنظیم (او آئی سی) ہیومن رائٹس کمیشن نے کشمیر کی صورتحال پر جائزہ پیش کیا ہے۔جس میں او آئی سی نے پاکستان کے موقف کی من وعن تائید کی ہے۔ کشمیر میں کرفیو کو اور کالے قوانین کے نفاذ کو 117 دن ہوگئے ہیں۔ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں جاری ہیں۔بابری مسجد پر بھارتی عدالتی فیصلے پر ہمیں تشویش ہے۔ بابری مسجد کے فیصلے پر او آئی سی نے پاکستان کی تشویش کی تائید کی ہے۔ او آئی سی پر تنقید ہوتی تھی کہ ادارہ اپنا کردار ادا نہیں کررہا ہے۔لیکن او آئی سی نے رواں ہفتے کشمیر کے حوالے سے اپنے اجلاس میں نقطہ نظر واضح کیا ہے۔


ای پیپر