پنجاب کا مستقبل اچھا نظر آ رہا ہے :وزیر اعظم
30 نومبر 2019 (16:49) 2019-11-30

لاہور: وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ آج سے کسانوں کو زندگی میں تبدیلی آئے گی، پنجاب لینڈ ریونیو اتھارٹی اور سٹیٹ بینک کا کسانوں کو زمین کے کاغذات دیکھا کر قرضے دینے کا معاہدہ ایک انقلاب ہے ، ہماری حکومت نے پاکستان میں غربت ختم کرنے کا سب سے بڑا منصوبہ احساس پروگرام شروع کیا، غریب عورتوں کی مدد ،نوجوانوں کو سود کے بغیر قرضے دیئے جا رہے ہیں، پاکستان میں95فیصد کسانوں کے پاس 12ایکڑ سے بھی کم زمین ہے، پاکستانی معیشت اب آگے کی جانب جا رہی ہے ، اب ہماری کوشش ہے کہ گروتھ ریٹ کو بڑھایا جائے.

عمران خان نے اپنے دورہ لاہور میں عثمان بزدار کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ آپ اچھے طریقے سے کام کر رہے ہیں لیکن اس کی تشہیر نہیں کرتے ہیں، ان سے کہوں گا لوگوں کو آگاہی کےلئے کچھ تھوڑی تشہیر کرلیا کریں، مجھے پنجاب کامستقبل اچھا نظر آرہا ہے، پنجاب پاکستان کی ترقی میں لیڈ کرے گا۔

 وزیراعظم عمران خان نے کسانوں کو زرعی قرضے دینے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج کے دن سے کسانوں کو زندگی میں تبدیلی آئے گی، جبکہ مہذب معاشرے میں امیر اور غریب میں اتنا زیادہ فرق نہیں ہوناچاہیے، ایک انسانیت کا معاشرہ ان تمام طبقوں کو ساتھ اٹھانے کی کوشش کرتا ہے جو پیچھے رہ گئے ہوتے ہیں اور ہم سب کو یہ یاد رکھنا چاہیے کہ یہ ہمارے نبی اکرم کی سنت ہے، مدینے کی ریاست ان کی سنت ہے اور ریاست مدینہ نے سب سے پہلے ذمہ داری لی تھی نچلے طبقے کو اوپر لانے کی۔ انہوں نے کہا کہ آج جب ہم چین کو دیکھتے ہیں تو ان کی سب سے بڑی بات یہ ہے کہ 70کروڑ لوگوں کو30سالوں میں غربت سے نکلا اور وہ لوگ ایسے ہی نہیں غربت سے نکلے ریاست نے فیصلہ کیا کہ ہم نے نچلے طبقے کو اوپر اٹھانا ہے اور انہوں نے کسانوں پر خاص مدد کی۔

وزیراعظم نے کہا کہ جب چین کے دورے پر گیا تو وہاں جا کر معلومات حاصل کیں کہ کیسے ریاست نے لوگوں کو اوپر لایا اور کون کون سے اقدامات کئے، آج پنجاب لینڈ ریونیو اتھارٹی اور سٹیٹ بینک نے جو کسانوں کو زمین کے کاغذات دیکھا کر قرضے دینے کا معاہدہ کیا ہے یہ ایک انقلاب ہے کیونکہ پاکستان میں چھوٹے کسانوں کےلئے قرضہ لینا عذاب ہے اور اب تک نا ممکن رہا ہے اور سمال اینڈ میڈیم انڈسٹری جو پیچھے رہ گئی ہے اورسمال اینڈ میڈیم انڈسٹری معیشت کی ریڑھ کی ہڈی ہوتی ہے ان کےلئے بھی بہت مشکل ہے قرضہ لینا، یہ آغاز ہوا ہے اور امید کرتا ہو ں کہ یہ زبردست کام ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ میں بہت خوش ہوتا ہوں جب اس طرح کی سوچ کو دیکھتا ہوں جس کے ذریعہ اپنی غریب عوام کی غربت سے نکالنا ہو، ہماری حکومت نے پاکستان میں غربت ختم کرنے کا سب سے بڑا منصوبہ احساس پروگرام شروع کیا اور مشکل وقت میں 200ارب روپے اس پروگرام میں لا رہے ہیں، احساس پروگرام میں سرکاری اور نجی اداروں کی مدد سے کام کررہے ہیں، غریب عورتوں کی مدد ،نوجوانوں کو سود کے بغیر قرضے دیئے جا رہے ہیں اور احساس پروگرام کے ڈیٹا بیس کو بھی درست کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں95فیصد کسانوں کے پاس 12ایکڑ سے بھی کم زمین ہے اور انہیں سب سے زیادہ قرضوں کی ضرورت ہوتی ہے، ملک کو ڈیجیٹلائزیشن کی جانب لے جارہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت کے 6 سے 7 ماہ میں ایسے حالات تھے نہیں کہ کوئی قرضوں کے دینے کے منصوبوں کو لائیں اور ساری کوشش تھی کہ روپے کی قدر کو بڑھائیں،ہمارے پاس تاریخی خسارے کا سامنا تھا اور 10ارب ڈالر قرضے کی قسطیں واپس کرنی تھیں جو کبھی کسی حکومت کو کرنے نہیں پڑے تھے اور اس کی وجہ سے روپے پر پریشر مسلسل بڑھ رہا تھا نہ ہی ہمارے پاس فارن ایکسچینج تھے اور خوف تھا کہ پتہ نہیں روپیہ کدھر جا کر رکے گا اور آج خوشی ہے کہ پچھلے 3سے 4ماہ میں روپیہ مستحکم ہو گیا ہے، جس کی وجہ سے بزنس میں اور سٹاک مارکیٹ میں کنفیڈنس آیا ہے،غیر ملکی سرمایہ کار پاکستان کی جانب آرہے ہیں جبکہ سٹیٹ بینک کے مطابق ایک ہزار ارب تک قرضے کسان لے چکے ہیں اور پاکستان کی تاریخ میں سب سے زیادہ قرضے کسانوں کو دیئے گئے ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ پاکستانی معیشت اب آگے کی جانب جا رہی ہے اور اب ہماری کوشش ہے کہ گروتھ ریٹ کو بڑھایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار اچھے طریقے سے کام کر رہے ہیں لیکن اس کی تشہیر نہیں کرتے ہیں جبکہ ان سے کہوں گا لوگوں کو آگاہی کےلئے کچھ تھوڑی تشہیر کرلیا کریں، مجھے پنجاب کامستقبل اچھا نظر آرہا ہے اور پنجاب پاکستان کی ترقی میں لیڈ کرے گا۔


ای پیپر