پاکستان سمیت خطے کے دریائوں میں اینٹی بایوٹکس کا انکشاف
30 May 2019 (16:40) 2019-05-30

لندن: پاکستان سمیت دنیا کے کئی دریائوں میں اینٹی بایوٹکس کی بے تحاشہ مقدار کا انکشاف ہوا ہے یعنی محفوظ کردہ مقدار سے بھی بعض دریائوں میں اینٹی بایوٹکس کی بہتات کئی سو فیصد زیادہ ہے۔

تفصیلات کے مطا بق اس ضمن میں کئے جانے والے عالمی سروے سے معلوم ہوا ہے کہ پاکستان ، بنگلہ دیش، کینیا، گھانا، نایئجیریا اور یورپ میں آسٹریا وہ ممالک ہے جہاں کے دریائوں میں اینٹی بایوٹکس کی شرح بہت زیادہ ہے اور بعض مقامات پر تو یہ مقررہ مقدار سے 300 گنا زائد ہے۔

برطانیہ کی یونیورسٹی آف یارک نے چھ براعظموں میں موجود 72 ممالک کا بھرپور جائزہ لیا ہے جس میں عام استعمال ہونے والی 14 اینٹی بایوٹکس کا دریائی پانی میں جائزہ لیا گیا تو معلوم ہوا کہ 65 فیصد جگہوں پر اینٹی بایوٹکس موجود ہے۔

ان میں بنگلہ دیش کے پانیوں میں 300 گنا تک اینٹی بایوٹکس زائد مقدار میں پائی گئی اور وہاں میٹرونائیڈیزول اٹی پڑی تھی۔ یہ دوا جلد اور منہ کے انفیکشن میں کھائی جاتی ہے۔


ای پیپر