افغانستان بھی بھارت کی ڈگر پر چل پڑا ،پاکستان کیخلاف ہرزہ سرائی
30 مارچ 2018 (21:19) 2018-03-30

کابل:افغان وزارت دفاع نے پاکستان کی جانب سرحد پار دہشتگردوں کی محفوظ پناہ گاہوں کے حوالے سے ڈوزیئردیئے جانے کی تصدیق کردی جبکہ وزارت دفاع کے قائمقام ترجمان محمد ردمنیش نے الزام عائد کیا ہے کہپاکستان خود دہشتگردی کا مرکز ہے،ہم نے ہمیشہ اپنے ملک میں دہشتگردوں کے خلاف بلاتفریق کاروائی کی ہے ۔جمعہ کوافغان ٹی وی ” اے ٹی این نیوز “کے مطابق افغان وزار ت دفاع نے تصدیق کی ہے کہ پاکستان نے ایک ڈوزئیرافغان سفارتخانے کے حوالے کیا ہے جس میں پاکستان کی سیکورٹی فورسز اور عوام پر دہشتگردوں کی جانب سے حملوں کیلئے افغان سرزمین کے استعمال کے ثبوت بھی شامل ہیں۔

افغانستان کو دی گئی دستاویز میں سوات میں ایک پاکستانی فوجی یونٹ پر طالبان کی جانب سے کیے گئے خودکش حملے میں افغانستان کے ملوث ہونے کے ثبوت بھی فراہم کیے گئے ہیں۔اسکے علاوہ دستاویز میں ٹی ٹی پی ،جماعت لاحرار اور دیگر دہشتگرد گروپوں کی افغان سرزمین پر پناہ گاہوںکی موجودگی کے ثبوت بھی فراہم کیے گئے ہیں۔پاکستان نے افغان حکومت نے مطالبہ کیا ہے کہ دہشتگردوں کے ٹھکانوں کے خلاف موثر کاروائی کی جائے اور جہاں سے وہ پاکستانی شہروں ،پاکستانی فوجی تنصیبات کو نشانہ بنانے کیلئے مالی امداد حاصل کرتے ہیں اور جہاں منصوبہ بندی کی جاتی ہے ۔تاہم افغان وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ افغان حکومت دہشتگردوں سے بلاتفریق لڑ رہی ہے ۔

وزارت دفاع کے قائمقام ترجمان محمد ردمنیش کا کہنا تھاکہ ہم نے ہمیشہ اپنے ملک میں دہشتگردی کے خلاف لڑائی لڑی ہے اور یہ ضرروری نہیں ہے کہ وہ کہاں سے ہیں۔پاکستان خود دہشتگردی کا مرکز ہے ۔واضح رہے کہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اگلے ہفتے افغانستان کا دورہ کریں گےجہاں وہ افغان حکام کے ساتھ بات چیت کریں گے ۔


ای پیپر