ہسپتال میں ٹیکنشین نے ایکسرے کرانے والی بچی کو مکہ مار کر جان لے لی
30 مارچ 2018 (13:46) 2018-03-30

بہاولپور :بہاولپور کے نجی اسپتال میں ایکسرے ٹیکنیشن کے مبینہ تشدد سے 9سالہ مریضہ بچی جاں بحق ہوگئی۔


تفصیلات کے مطابق ٹیکنیشن نے ایکسرے کے دوران سیدھا کھڑا نہ ہونے پر بچی کو مبینہ طور پر گھونسا مارا تھا۔بشیر نامی شخص اپنی 9 سالہ بیٹی سونیا کو ایکسرے کے لیے نجی اسپتال لایا تھا، لڑکی بیمار تھی اس لیے سیدھی کھڑی نہیں ہورہی تھی۔بشیر نے الزام لگایا ہے کہ ایکسرے روم میں ٹیکنیشن سلیم نے اس سے بچی کو پکڑ کر کھڑے ہونے کو کہا تھا لیکن بچی سیدھی کھڑی نہ ہوئی تو ٹیکنیشن نے بچی کو بھی گھونسا مارا اور ا سے بھی گھونسا مارا،گھونسا لگنے سے بچی گر گئی اور موقع پر انتقال کرگئی۔


والد کے احتجاج پر پولیس اور اسسٹنٹ کمشنر دانش ذاکر موقع پر پہنچ گئی۔اسسٹنٹ کمشنر کا کہنا ہے کہ ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ بچی کی موت کے حوالے سے رپورٹ تیار کر رہا ہے،پولیس نے رسمی کارروائی کی ہے اور مبینہ طور پر دباو ڈال کر صلح کرادی گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ نہ تو کوئی مقدمہ درج کیا گیا ہے اور نہ ہی ٹیکنیشن کو حراست میں لیا گیا ہے۔


ای پیپر