خطبہ حج پر عالم اسلام کیلئے اہم پیغام ،مکہ مکرمہ پہلی دفعہ حیرت انگیز مناظر دیکھنے کو ملے
30 جولائی 2020 (16:48) 2020-07-30

اسلام آباد: خطبہ حج میں کہا گیا کہ دنیا پر مشکلات اللہ کی طرف سے امتحان ہے اور مسلمان ہر طرح کی خرافات سے دور رہیں۔

تفصیلات کے مطابق مسجد نمرا سے شیخ عبداللہ بن سلیمان نے حج کا خطبہ دیتے ہوئے کہا کہ گواہی دیتا ہوں اللہ کے سوا کوئی معبود نہیں اور اللہ کا شکرادا کرتے ہیں جس نے بے شمارنعمتیں عطا کیں۔دنیا پر مشکلات اللہ کی طرف سے امتحان ہے اور عبادات سے ہی مصیبت سے چھٹکارا ملتا ہے۔ قربانی اورعبادات خالصتاً اللہ کے لیے ہی ہیں، سیدھے راستے پر چلنے والے کے لیے ہی نجات ہے، تقویٰ سے انسان برائیوں سے بچتا ہے اور اہل تقویٰ کی صفات میں اولین صبر ہے۔

حضورﷺ نے اپنی زندگی خیر کے لیے وقف کی، صبر پرکاربند رہنےوالوں کے لیے خیرکی بشارت ہے۔ خطبہ حج میں کہا گیا کہ دنیاوی زندگی کبھی مصائب اور مشکلات سے خالی نہیں ہوتی، مصیبتیں اور مشکلات انسان کو اللہ کے ہونے کا یقین دلاتی ہیں، اللہ انسان کے لیے مشکل نہیں آسانی چاہتا ہے۔ اسلام نے معاشرے میں باہمی احترام اور اچھے اخلاق کا درس دیا ہے، اسلام رشتے دار، عزیز واقارب کاخیال رکھنے کابھی درس دیتا ہے،قرآن مجید میں عدل و انصاف کا درس دیا گیا ہے، اسلام کسی بھی قسم کے فتنے کو پھیلانے سے روکتا ہے، اسلامی تعلیمات ہر اس چیز سے اجتناب کا درس دیتی ہے جو انسانی صحت کے لیے مضر ہو۔

شیخ عبداللہ بن سلیمان نےمزید کہا کہ نبی کریم ﷺ نے فرمایا اگر کسی جگہ وبائی مرض پھیلے تو وہاں نہ جاؤ، جس جگہ وبائی مرض ہو وہاں کے لوگ کسی اور جگہ نہ جائیں۔اس سے پہلے غلاف کعبہ کی تبدیلی کے موقع پر قدرت مہربان ہو گئی۔مکہ مکرمہ، منی اور عرفات میں بارانِ رحمت ہوئی جس سے حجاج کرام کے چہرے کھل اٹھے۔مکہ مکرمہ میں خانہ کعبہ کو غسل دینے اور تبدیلی غلاف کعبہ کی پروقارتقریب ہوئی۔ حرمین شریفین کے امور کے سربراہ شیخ عبدالرحمان السدیس نے اس تقریب کی نگرانی کی۔

بتایا گیا ہے کہ تقریب میں کلید بردار کعبہ،منتظمین،سعودی حکام اور غلاف ساز کسوہ فیکٹری کے ذمہ دار بھی شریک ہوئے۔خانہ کعبہ کو غسل دینے کے بعد خالص سونے، چاندی کی تاروں اور خالص ریشم سے تیار کردہ غلاف کعبہ تبدیل کیاگیا۔غلاف کی تیاری میں 700 کلو گرام سے زائد خالص سونا ،چاندی اور 675 کلو گرام خالص ریشم استعمال کی گئی۔غلاف کعبہ کی لمبائی پچاس فٹ اور چوڑائی 35 سے 40 فٹ ہے۔ جب کہ اس کی تیاری پر 24 ملین سعودی رالچ لاگت آئی۔

غلاف کعبہ کے چار کونوں پر سور اخلاص منقش ہے۔جبکہ مختلف آیات پر مشتمل 16 پٹیاں الگ الگ سے جڑی ہیں۔غلاف کعبہ کو مکہ مکرمہ کی دارالکسوہ فیکٹری میں تیار کیا گیا۔یہ کارخانہ ہر سال بیت اللہ کا ایک نیا غلاف تیار کرتا ہے جسے 9 زی الحج کو پورے تزک و احتشام کے ساتھ خانہ کعبہ کی زینت بنایا جاتا ہے۔


ای پیپر