اپوزیشن وزیر اعظم کی ذات پر کیچڑ اچھال رہی ہے: فردوس عاشق
30 دسمبر 2019 (22:00) 2019-12-30

اسلام آباد: وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ اپوزیشن کے روایتی ہتھکنڈے وزیر اعظم کی ذات پر کیچڑ اچھالنے کے سوا کچھ نہیں، حکومت قانون کی عملداری اور صادق و امین بیورو کریٹ کو تحفظ دیتی ہے۔ وزیر اعظم کی قیادت میں کرپشن فری پاکستان کے لیے کوشاں ہیں ۔

اسلام آباد میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم عمران خان پہلی مرتبہ پاکستان کی تاریخ میں اداروں کے درمیان پل کا کردار ادا کر رہے ہیں اور ریاست کو مضبوط بنانے کے محاذ پر کھڑے ہیںمخالفین نے نیب ترمیمی آرڈیننس پڑھا تک نہیں ہے، عمران خان کی قیادت میں موجودہ حکومت ہر شعبے کے اندر گلے سڑھے نظام کے خاتمے کے لیے ریفارمز ایجنڈا متعارف کرارہے ہیں۔ ڈان لیکس کے بانیوں جن کی پاکستان کے قومی مفاد کا تحفظ کرنا ذمہ داری تھی وہ ریاستی اداروں کے خلاف سازشوں میں مصروف عمل رہے۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ جنہوں نے نیب سے فائدہ اٹھایا اور جو حقیقی گٹھ جوڑ کی تصویر تھے وہ نیب آرڈیننس کو مدر آف آرڈیننس کہہ رہے ہیں، میں شرطیہ کہتی ہوں کہ انہوں نے نیب ترمیمی آرڈیننس پڑھا تک نہیں۔ وزیر اعظم عمران خان کی حکومت اس ملک میں قانون کی بالادستی کی یقین دہانی کرائے گی، کسی فرد کی خوشنودی کے لیے نہیں کام کرے گی۔ بدعنوان اور کرپٹ عناصر کو اس آرڈیننس میں کوئی ڈھیل نہیں دی گئی ہے، ایماندار اور دیانت دار لوگوں کو تحفظ فراہم کیا گیا ہے اور بدعنوانوں کو کسی بھی قسم کا ریلیف دینے کا یہ حکومت تصور نہیں کرسکتی۔

فردوس عاشق اعوان نے کہا کہوزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں موجودہ حکومت ہر شعبے کے اندر گلے سڑھے نظام کے خاتمے کے لیے ریفارمز ایجنڈا متعارف کرارہے ہیں،ڈان لیکس کے بانی ریاستی اداروں کے خلاف سازشوں میں مصروف عمل رہے اور ریاست کے ڈھانچے کو کمزور کرنے کے لیے اداروں میں ٹکرا کا سبب بنے اور وہ آج لیکچر دے رہے تھے اپوزیشن کو نیب ترمیمی آرڈیننس پر تنقید سے پہلے آرڈیننس کو پڑھ لینا چائیے، آج خطے میں بھارت کی روایتی ہٹ دھرمی جاری ہے، بھارت میں انسانی حقوق کا استحصال جاری ہے۔ مظلوم کشمیریوں کو ان کے آئینی حقوق سے محروم کر دیا گیا۔ ہمیں سیاسی، سماجی اور مالی برتری کے لیے قائد کے افکار کی روشنی میں متحد ہونا ہے، قائد کے وژن کے مطابق وزیر اعظم ملک میں اصلاحات کی طرف رواں دواں ہیں۔ قائد اعظم کا پاکستان محفوظ ہاتھوں میں ہے۔ ہر شعبے میں گلے سڑے نظام کے لیے ریفارمز ایجنڈا متعارف کروایا جا رہا ہے۔


ای پیپر