مقبوضہ کشمیر نہیں آزاد کشمیر ،ٹرمپ کی خطرناک چال
30 اگست 2019 (23:56) 2019-08-30

اسلام آباد: جمعیت علمائے اسلام( ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کی تبدیلی سے موجودہ حکومت باخبر تھی،ٹرمپ جس ثالثی کی بات کر رہاہے وہ مقبوضہ کشمیر کی نہیں آزاد کشمیر کی بات ہے۔

امیر جمعیت علمائے اسلام ف مولانا فضل الرحمن نے یہ بات جمعہ کوجے یو آئی آزاد کشمیر کے علمائے کرام کے اہم اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی ۔اجلاس جے یو آئی کے سب آفس آئی نائن اسلام آباد میں منعقد ہوا جس میں میں کشمیر کے اضلاع سے تعلق رکھنے والے علمائے کرام کی بڑی تعداد میں شریک ہوئی۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیاکہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے خلاف 19 ستمبر کو مظفرآباد میں آزادی مارچ ہوگا۔اس موقع پر مولانا فضل الرحمان نے خطاب میں کہا کہ موجودہ حکومت احتجاج کر رہی ہے، جبکہ مودی پوری دنیا کو ہم نوا بنا رہا ہے۔

مقبوضہ کشمیر کی آزادی تک جے یو آئی اپنی جد و جہد جاری رکھے گی۔انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کی جدوجہد کا فیصلہ اندھیرے میں نہ کیا جائے۔ کشمیریوں کو خبر میڈیا سے ملتی ہے جبکہ وہ اس معاملہ میں فریق ہیں۔ کشمیریوں کو اپنی آزادی کی جنگ خود لڑنا پڑے گی۔

مولانا فضل الرحمان نے ایک بار پھر کہا کہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کی تبدیلی سے موجودہ حکومت باخبر تھی ، ٹرمپ جس ثالثی کی بات کر رہا وہ مقبوضہ کشمیر کی نہیں آزاد کشمیر کی بات ہے۔


ای پیپر