شوکت خانم ہسپتال کے پیچھے چھپنے والوں کا مقدر شکست ہے : شہباز شریف
30 اپریل 2018 (15:55) 2018-04-30

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ جب پانچ سال ایک صوبہ میں حکومت کرنے کے بعد بھی آپ شوکت خانم ، نمل یونیورسٹی اور کرکٹ ورلڈکپ کے پیچھے چھپ جائیں تو سمجھ لیں کہ شکست آپ کا مقدر ہے جو شخص گذشتہ 22 برس سے تقریر نہیں بدل سکا ایسے شخص سے ہمارے ملک کا ایک طبقہ تقدیر بدلنے کی امید لگائے بیٹھا ہے ۔ خان کی ساری تقریر کا متن صرف ’’میں‘‘ ہے ۔ یعنی ’’میں‘‘ تو سب کچھ ممکن ہے میں نہیں تو کچھ بھی نہیں۔


وزیراعلی پنجاب نے مسلم لیگ ن کی حکومت کی کارکردگی پر روشنی ڈالتے ہوئے اپنے بیان میں کہا کہ ہماری سیاست ملک و قوم کی خدمت اور ترقی ہے اور رکاوٹوں کے باوجود ہم نے تعمیر و ترقی کے منصوبوں کو آگے بڑھایا ہے ، لیکن قوم کو اندھیروں سے دوچار کرنے والوں کو ترقی کے سفر سے تکلیف ہو رہی ہے ۔ شہباز شریف نے کہا کہ مخالفین نے پاکستان کی منزل کو کھوٹا کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی، عوام کی خدمت خالی نعروں سے نہیں ہوتی، شکست خوردہ عناصر کی ہر سازش ناکام ہوگی۔صدر مسلم لیگ ن نے کہا کہ میرا جینا مرنا اپنے عوام کے ساتھ ہے ، جب تک جان میں جان ہے ، عوام کی بے لوث خدمت کرتا رہوں گا، مٹھی بھر عناصر مخالفت کرتے رہیں، خدمت کا سفر جاری رکھیں گے۔


شہباز شریف کا کہنا تھا کہ سوچ طلب بات یہ ہے کہ جس شخص کو اپنے آپ سے ہٹ کر کوئی دوسرا نظرنہیں آتا، وہ ایک پاکستان کیسے بنا سکتا ہے ۔ کاش کے پی کے کے بارے میں اپنی کارکردگی اور 23 مارچ 2013ء کو مینار پاکستان پر کئے وعدے کے بارے میں بتا دیتا کہ ان وعدوں اور دعوؤں کا کیا بنا۔ احتساب کا نظام کیوں بند رکھا۔ گرلز تعلیمی ایمرجنسی کیوں نافذ نہ کی۔ ایک نصاب تعلیم کیوں نہیں دیا۔ نئے ہسپتال اور نئے تعلیمی ادارے کیوں قائم نہیں کئے۔ زرعی ایمرجنسی کیوں نافذ نہ کی۔ شوگر مافیا میں شوگر کنگ جہانگیر خان ترین شامل ہے ۔ نئے ریکارڈ قرضے کیوں لئے، ہائیڈرو بجلی گھر کیوں قائم نہ کئے۔ کچھ پانچ سال کی کے پی حکومت کی کارکردگی تو پیش کر دیتے۔


ای پیپر