حکومت جعلی اور ناجائز ہے : مولانا فضل الرحمن
29 اکتوبر 2019 (16:43) 2019-10-29

ملتان : جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت جعلی ہے اور ناجائز ہے، اس کو تسلیم نہیں کرتے، موجودہ حکومت میری تصویر سے بھی خوف ہے، کشمیر کے معاملے میں حکومت کی دوغلی پالیسی ہے، ایک طرف جنگ کا اعلان کرتے ہیں، دوسری جانب کرتار پور میں سابق بھارتی وزیراعظم کے استقبال کی تیاری کرتے ہیں، ہم اس کو کسی صورت تسلیم نہیں کریں گے، پاکستان ایک اکائی ہے۔

ملتان میں آزادی مارچ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ کامیاب آزادی مارچ پر پوری قوم کو سلام پیش کرتا ہوں اور دعوت دیتا ہوں کہ سارے طبقہ کے لوگ آزادی مارچ میں شامل ہوں، آج قوم وہ حق مانگتی ہے جو آئین پاکستان نے دیا ہے، آج آزادی مارچ میں تمام سیاسی جماعتیں شامل ہیں، سب کا اتفاق ہے کہ یہ حکومت جعلی ہے اور اس کو تسلیم نہیں کرتے، عوام کے حق میں ڈاکے کو تسلیم نہیں کرتے اور ڈاکوئوں کے خلاف اعلان جنگ کرتے ہیں، حکومت کے پاس عوام کا مینڈیٹ نہیں ہے، اب یہ میدان جہاد ہے اور جس راستے میں نکلے ہیں یہ اللہ کا راستہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ اسلام آباد اس لئے جا رہے ہیں کہ تمام دنیا کو بتا سکیں کہ پاکستان کی حکومت عوام کی حکومت نہیں ہے، یہ ناجائز نااہل حکومت ہے۔ حکومت نے معیشت کا بیڑہ غرق کر دیا ہے، مہنگائی زوروں پر ہے ملک میں 25لاکھ نوجوان بے روزگار ہو گئے ہیں، نوجوان کا مستقبل تاریک ہو چکا ہے،آزادی مارچ ملک کے ہر طبقے کی ترجمانی کر رہا ہے۔  میڈیا پر قدغن لگایا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ فضل الرحمان کی تصویر نہیں دکھانی ہے، میں کہتا ہوں کہ حکمران میری تصویر سے بھی خوف کھاتے ہیں۔


ای پیپر