Government, violence, workers, Multan jalsa, Fazal-ur-Rehman, PDM
29 نومبر 2020 (18:49) 2020-11-29

ملتان: جمعیت علمائے اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کارکنوں کو ملتان پہنچنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ جلسہ ہر صورت ہو گا۔

پی ڈی ایم اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ حکومت ریاستی دہشتگردی کرکے تشدد کا راستہ اپنانے تو کارکن بھی ڈنڈے اٹھالیں، رکاوٹیں توڑ ڈالیں اور ہر قیمت پر جلسہ گاہ پہنچیں۔

سربراہ پی ڈی ایم نے وارننگ دیتے ہوئے کہا کہ اگر حکومت نے ڈنڈا استعمال کیا تو ہماری طرف سے بھی بھر پور جواب دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کوئی طاقت پی ڈی ایم جلسے کو نہیں روک سکتی، ہر طرح کی صورت حال سے نمٹنے کے لیے حکمت عملی تیار کر لی ہے۔ لاقانونیت کی اجازت نہیں دیں گے۔

فضل الرحمان نے حکومت پر واضح کیا کہ اگر انہیں جلسہ کرنے کی اجازت نہ دی گئی تو ہر جگہ جلسہ گاہ بن جائے گا۔ انہوں نے کہا تھا کہ اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے جنوری میں لانگ مارچ کا اعلان کیا گیا تھا لیکن شاید حکومت جلد چاہتی ہے۔

خیال رہے کہ جمعیت علمائے اسلام ف کے سربراہ کے ساتھ پاکستان مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کے رہنماوں نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا۔

سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ بلاول بھٹو زرداری اور سابق صدر آصف زرداری شاید جلسے میں شرکت نہ کر پائیں لیکن آصفہ بھٹو زرداری جلسے سے ضرور خطاب کریں گی۔ اس سے پہلے وہ اپنے بھائی بلاول کے ساتھ کئی سیاسی تقریبات میں نظر آئیں ہیں لیکن بلاول کے بغیر پہلی دفعہ وہ کسی سیاسی جلسے سے خطاب کریں گی۔

ادھر لیگی رہنما رانا ثنا اللہ نے کہا کہ مریم نواز ملتان کے جلسے میں ضرور شرکت کریں گی اور عوام سے خطاب بھی کریں گی۔ انہوں نے کہا کہ مریم کے علاوہ باقی پارٹی رہنما بھی جلسے میں شامل ہوں گے۔


ای پیپر