Punjab, pandemic vaccination, Uzma Bukhari, CM Punjab, PML-N
29 مارچ 2021 (15:35) 2021-03-29

لاہور: پاکستان مسلم لیگ ن پنجاب کی ترجمان عظمیٰ بخاری نے کہا کہ پنجاب کی گیارہ کروڑ آبادی میں صرف چند لاکھ افراد کو ویکسین لگائی گئی ۔

وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی پریس کانفرنس پر ردعمل دیتے ہوئے عظمیٰ بخاری نے کہا کہ ایک طرف حکومتی وزراء خود پارٹیاں اور شادیاں انجوائے کر رہے ہیں دوسری طرف عوام پر ایس او پیز پر عمل کرنے کا دباؤ ڈال رہے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ پنجاب واحد صوبہ ہے جہاں سب سے زیادہ طبی عملہ وائرس کا شکار ہوا لیکن پنجاب کی گیارہ کروڑ آبادی میں صرف چند لاکھ افراد کو ویکسین لگائی گئی ۔

واضح رہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کہا ہے کہ پنجاب بھر میں لاک ڈاؤن 11 اپریل تک جاری رہے گا ۔ یکم اپریل سے شادی کے اجتماعات پر پابندی ہوگی جبکہ ان ڈور اور آؤٹ ڈور شادیوں کی اجازت نہیں ہو گی ۔ انہوں نے بتایا کہ تمام ہوٹلز کے اندر انڈور اور آؤٹ ڈور پر پابندی ہے ہوٹلز میں ٹیک اوے کھلے رہیں گے ۔ اس کے علاوہ پارکس اور تفریحی مقامات مکمل طور پر بند رکھے جائیں گے ۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ ہفتے میں 2 روز دکانیں بند رہیں گی جبکہ مارکیٹس اور بازار شام 6 بجے تک کھلے رہیں گے انہوں نے کہا کہ جن لوگوں کیخلاف پرچے ہوئے ہیں اس معاملے کو آئی جی پنجاب دیکھیں گے ۔ ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنے والوں کیخلاف قانون کے مطابق کارروائی ہوگی ۔

عثمان بزدار نے کہا کہ معاشی سرگرمیوں پر کوئی پابندی نہیں لگائی جا رہی ، فیکٹریز اور انڈسٹریز میں ایس او پیز کے تحت کام جاری رہے گا ۔ انہوں نے کہا کہ کاروبار بند کرنے کے متحمل نہیں ، معاشی معاملات جاری رکھنا چاہتے ہیں ۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ چاہتے ہیں معیشت کا پہیہ چلتا رہے اور لوگوں کو صحت مند رکھا جائے ، چاہتے ہیں کم سے کم لوگ گھروں سے کام کاج کیلئے نکلیں ، چاہتے ہیں لوگ بلاوجہ گھر سے باہر نہ نکلیں ۔

انہوں نے بتایا کہ عالمی وبا کی تیسری لہر کا مقابلہ کر رہے ہیں ، موجودہ لہر اس وقت زیادہ خطرناک ہے جس کی وجہ سے ہسپتال تیزی سے بھر رہے ہیں جبکہ وبا کے مثبت کیسز کا تناسب 14 فیصد ہوچکا ہے ۔

عثمان بزدار نے کہا کہ پنجاب بھر میں 2 لاکھ 15 ہزار 227 مثبت کیسز ہیں ، جن میں 23 ہزار 106 کیسز ایکٹو ہیں جبکہ 252 افراد کی حالت تشویشناک ہے ۔

انہوں نے بتایا کہ پنجاب بھر میں اب تک 6 ہزار 244 اموات ہوئی ہیں جبکہ گزشتہ 24 گھنٹے میں 39 اموات ہوئی ہیں ۔ لاہور ، گوجرانوالہ ، گجرات ، راولپنڈی ، فیصل آباد سمیت دیگر شہروں میں کیسز کی تعداد زیادہ ہے ۔


ای پیپر