German, coal-fired power, station, environment, UN
29 مارچ 2021 (13:15) 2021-03-29

برلن: جرمنی میں بیاسی سال پرانے بجلی گھر اور اس کی چمنی کو دھماکا خیز مواد کی مدد سے منہدم کر دیا گیا ۔

کوئلے سے بجلی بنانے کیلئے پاور پلانٹ انیس سو اڑتیس میں تعمیر کیا گیا ، کافی عرصے سے اس کا استعمال ترک کر دیا گیا تھا اور اس جگہ پر نئی تعمیرات کیلئے ایک سو دس میٹر اونچے کولنگ ٹاور ، ڈھائی سومیٹر اونچی چمنی اور ستر میٹر اونچے بوائلر کو دھماکا خیز مواد کی مدد سے گرا دیا گیا ۔

مقامی میڈیا کے مطابق سارے عمل میں چار سو بیس کلو گرام دھماکا خیز مواد استعمال کیا گیا ، اس کے علاوہ موقع پر کیمرے لگا کر سارے واقعے کو ریکارڈ بھی کیا گیا ۔

خیال رہے کہ ماہرین کے نزدیک کوئلے سے بجلی بنانے کے عمل سے ماحولیاتی آلودگی میں اضافہ ہوتا ہے اس لیے وہ ماحول کو آلودگی سے پاک کرنے کیلئے کوئلے کے استعمال کے خلاف ہیں ۔

دوسری جانب امریکا نے ماحولیاتی آلودگی پر قابو پانے کیلئے عالمی سطح کا اجلاس بلانے کا اعلان کیا ہے جس میں امریکی صدر بائیڈن نے روس اور چین کے ہم منصبوں کو بھی مدعو کیا ہے ۔

امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ آئندہ ماہ ہونیوالی ورچوئل کانفرنس میں دنیا کے 40 لیڈرز کو دعوت دی گئی ہے ۔ ورچوئل کانفرنس میں ترک صدر اردوان ، سعودی فرمانروا سلمان بن عبدالعزیز بھی شریک ہونگے جبکہ موسمیاتی کانفرنس انٹرنیٹ پر براہ راست دکھائی جائے گی ۔

اس حوالے سے ترجمان وائٹ ہاؤس کا کہنا ہے کہ کانفرنس میں توانائی اور موسمیاتی تبدیلی سے متعلق معاشی فورم پر غور ہوگا ، اس کے علاوہ کانفرنس کے 22 اور 23 اپریل کے سیشن میں محدود تعداد میں کاروباری ، معاشی رہنما بھی شریک ہونگے ۔

وائٹ ہاؤس کے مطابق کانفرنس میں مہلک اخراج کم کرنے اور گلوبل وارمنگ قابو میں رکھنے پر غور ہوگا ۔ موسمیاتی تبدیلی کو روکنے سے معاشی فوائد حاصل ہوں گے ۔

ترجمان وائٹ ہاؤس کا کہنا ہے کہ ٹیکنالوجی کی مدد سے مہلک اخراج کو کم کیا جائے گا ۔


ای پیپر