Pakistan, UN peacekeepers, Security Council, UNO
کیپشن:   فائل فوٹو
29 مارچ 2021 (11:11) 2021-03-29

اسلام آباد: پاکستان کی جانب سے سیکیورٹی کونسل سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ اقوام متحدہ کی امن فوج کی حفاظت کیلئے مناسب اقدامات کئے جائیں کیونکہ فوجیوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق پاکستان کی جانب سے یہ مطالبہ اقوام متحدہ کے پینل کے سامنے رکھا گیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ امن فوجیوں کیلئے دھماکہ خیز آلات سے بچاؤ کا چیلنج روز بروز بڑھتا جا رہا ہے، یہ ایک ایسا خطرہ ہے جس کا فوری کوئی تدارک ہونا لازمی ہے، عالمی ادارے کو چاہیے کہ اس مسئلے پر توجہ دے اور فوجیوں کی حفاظت کو یقینی بنائے۔

پاکستان کی جانب سے کہا گیا ہے کہ اقوام متحدہ کے فوجیوں کو ان دھماکہ خیز مواد کی موجودگی میں اپنے فرائض کی انجام دہی میں شدید مشکلات اور رکاوٹوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ ان مشکلات اور فوجیوں کی زندگی کو لاحق خطرات کو ختم کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔

اقوام متحدہ کے اس اجلاس میں پاکستان کی جانب سے سینئر سفارتکار محمد عامر خان نے شرکت کی۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ زمین میں نصب یہ دھماکہ خیز مواد جنھیں آئی ای ڈیز کیا جاتا ہے امن بحالی کی کوششوں کو ناکام بنانے کا باعث بنتے ہیں۔

محمد عامر خان کا کہنا تھا کہ فوجیوں کو درپیش خطرات کو ختم کرنے کیلئے ان کی صلاحیتوں میں اضافہ کیا جائے جبکہ جدید ترین ہتھیاروں کی فراہمی کیساتھ ساتھ ان کو طبی سہولتیں پہنچانا بھی بہت ضروری ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان نے اقوام متحدہ کی امن فوج کے اندر رہ کر بہت گراں قدر خدمات سرانجام دیں، پاکستانی فوجیوں کی جانب سے دی جانے والی قربانیوں کی طویل تاریخ ہے۔ پاکستانی فوج کے مرد اور خواتین اقوام متحدہ کے متعدد شعبوں سے منسلک ہیں۔


ای پیپر