بھارت کا کرتار پورراہداری پر 2اپریل کو مذاکرات سے انکار
29 مارچ 2019 (15:12) 2019-03-29

اسلام آباد/نئی دہلی: بھارت نے کرتار پورراہداری پر 2اپریل کو مذاکرات سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ ان مذاکرات سے قبل ماہرین کی کمیٹی کا ایک اور اجلاس بلایا جائے جبکہ پاکستان نے بھارتی اعلامیے پر افسوس کا اظہار کیاہے اور کہا ہے کہ مشاورت کے بغیر آخری وقت میں مذاکرات ملتوی کرنا ناقابل فہم ہے۔ بھارت اپنے ملک کے سکھوں کے مذہبی جذبات کے ساتھ کھیلنے لگا، پاکستان نے کرتارپور راہداری کھولنے کی بات کا وعدہ تو نبھادیا لیکن بھارت اب پیچھے ہٹنے کی کوشش کررہا ہے اور کرتارپور راہداری پر بلیک میلنگ شروع کردی ۔

بھارتی وزارت خارجہ نے 2 اپریل کو طے شدہ مذاکرات سے انکار کرتے ہوئے کہاہے کہ مذاکرات سے پہلے پاکستان کرتار پور راہداری سے متعلق اہم تجاویز پر وضاحت دے۔ بھارت نے کرتار پور سے متعلق کمیٹی کی تشکیل پر بھی اعتراض کر دیاہے۔بھارتی وزارت خارجہ کا کہناہے کہ پاکستان کا جواب آنے کے بعد مذاکرات کے اگلے دور کی تاریخ کا اعلان کریں گے۔ ان مذاکرات سے قبل ماہرین کی کمیٹی کا ایک اور اجلاس بلایا جائے۔

پاکستان کے دفتر خارجہ نے بھارتی اعلامیے پر افسوس کا اظہار کیاہے۔ ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر جاری بیان میں کہا بھارت کا کرتار پور رہداری پر مذاکرات ملتوی کرنا افسوسناک ہے۔انہوں نے کہا پاکستان سے مشاورت کے بغیر آخری وقت میں مذاکرات ملتوی کرنا ناقابل فہم ہے۔ مذاکرات پر دونوں ممالک نے 14مارچ کو اتفاق کیا تھا۔ مذاکرات کا مقصد مسائل کا حل تلاش کرنا اور اتفاق رائے ہوتا ہے۔سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ بھارتی بیان مشترکہ اعلامیہ کے برخلاف ہے۔ کوئی بھی شکایت تھی تو بھارت کو پہلے بتانا چاہئیے تھا۔ کسی بھی اختلاف کو بات چیت کے ذریعے ہی حل کیا جا سکتا ہے۔بھارتی تجاویز کا معاملہ بھی مذاکرات میں ہی حل ہوتا۔


ای پیپر