شہبازشر یف آئندہ وزیر اعظم ہوں گے:خواجہ سعد رفیق
29 مارچ 2018 (16:57)

لاہور: وفاقی وزیر ریلویز خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ شہبازشر یف آئندہ عام انتخابات کےلئے وزیر اعظم ہوں گے ‘ عمران خان کی طرح کاشخص میئر بھی نہیں بن سکتا یہ وزیر اعظم بننے کی بات کرتا ہے ‘ عمران خان صرف پشاور کے چوہے ماردیں اور زرداری کراچی کا کچرا اٹھادیں، یہی کام ان دونوں سے اپنی حکومت کے دوران نہیں ہونا‘ ذوالفقار بھٹو کی پھانسی کے بعد پیپلز پارٹی ختم نہیں ہوئی بلکہ زرداری صاحب نے پیپلز پارٹی کا سیتا ناس کیا ہے ‘ آپس کی لڑائی میں وقتی طور پر کوئی کامیاب تو ہوسکتا ہے مگر جیتے گا کوئی نہیں آپس کی لڑائی میں سب ہار جائیں گے ‘نواز شریف اور(ن) لیگ کے دیگر لوگوں کو الیکشن سے قبل گندا کیا جارہا ہے‘دعا کریں اس ملک میں الیکشن وقت پر ہوں ، دعا کریں سب لوگ آئین اور قانون کے دائرے میں رہ کر کام کریں۔

جمعرات کے روز اپنے حلقہ انتخاب میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ اگر گھر میں لڑائی ہوتی ہے تو کوئی وقتی طور پر توجیتتا ہے اور اسے فائدہ ہوتا ہے لیکن حقیقت میں پورا گھر ہار جاتا ہے ،ہم اپنے گھر کی لڑائی کو ختم کریں اور کارکردگی کی بنیاد پر ووٹ مانگیں ۔ عمران خان کے پاس پورا صوبہ ہے ،آصف زرداری کے پاس اگر سندھ میں کچھ ہوتا ہے تو وہ کراچی کا کچرا ہی اٹھا لیں ، عمران خان وہاں آدم خور چوہوں کو ماریں او رپولیو کو کنٹرول کریں ، ہم نے یہاں اس ڈینگی مچھر کو کنٹرول کیا ہے جو نظر نہیں آتا جبکہ آپ سے آدم خور چوہے ختم نہیں ہوئے اور خیبر پختوانخواہ سے آنے والا پولیو پورے ملک میں پھیل رہا ہے ۔ پشاور کو خوبصورت بناﺅ لوگ تمہیں ووٹ دیدیں گے لیکن گالیاں دے کر اورالزام لگا کر آپ کو ووٹ مل جائے گا تو اس طرح ووٹ نہیں ملتا بلکہ خراب ہوتا ہے ۔ میرا اندازہ ہے کہ پچھلی بار آپ جتنے ووٹ لے گئے تھے اب آپ کو اتنے نہیں ملیں گے ،لوگ گالیوں کی سیاست کو پسند نہیں کرتے ۔

عمران خان اپنے سیاسی مخالفین کے بارے میں اوئے توئے اور بد تمیزی کرتا ہے ، اس سے وہ مخالف کو نہیں بلکہ اپنے آپ کو نقصان پہنچار ہے ہو ۔ جب کوئی بھی سیاست میں آ جاتا ہے تو اس کی حیثیت باپ کی طرح ہوتی ہے ، باپ پیار بھی کرتا ہے ، شفقت بھی کرتا ہے ڈانتا بھی ہے اور گھر کو لے کر چلتا ہے اورجوڑ کر رکھتا ہے لیکن عمران خان میں ایسی کوئی خصوصیت موجود ہی نہیں ۔

آپ 68سال کے ہوو گئے ہیں لیکن آپ کے کام 18سال کے لڑکے والے ہیں، آپ کیسے ملک چلائیں گے ، ملک چلانا سنجیدہ لوگوں کا کام ہے ، کیا کوئی گھر چلانا آسان کام ہے جو 21کروڑ عوام کا گھر چلایا جا سکتا ہے ۔ آپ ابھی بھی غیر سنجیدہ اور الہڑ منڈا بنے ہوئے ہیںاور آپ کی نوجوانی ختم ہی نہیں ہو رہی ۔ آپ کہتے ہیں مجھے پاکستان کا وزیر اعظم بنا دو، آپ جیساشخص تو کسی شہر کا میئر نہیں بن سکتا ۔ اگر وزیراعظم بننا ہے تو اپنی زبان ٹھیک کرو ، گالیاں نہ دو ۔ آپ کے کان میں کوئی بات کر دے تو آپ تقریر شروع کر دیتے ہیں ۔ مجھے ایک تقریر کے دوران عمران خان نے اوئے سعد رفیق کہہ کر مخاطب کیا اور کہا کہ سعد رفیق نے اپنے گھر میں ٹھپے لگائے کیا کوئی اتنا ہی بیوقوف ہے جو ٹھپے بھی لگائے گا اور اپنے گھر میں لگائے گا ۔ انہوںنے شرکاءکو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ کیا آپ نے ووٹ نہیں دئیے تھے ،اس شخص کا کیا علاج ہے۔ میر اکیس ابھی تک سپریم کورٹ میں چل رہا ہے حکومت ختم ہونے میں دو ماہ رہ گئے ہیں اورہم کہہ رہے ہیں کہ انصاف کر دو ۔


ای پیپر