سٹیٹ آف افیئرز
29 جولائی 2019 2019-07-29

پاکستان ایک بہت اچھا ملک ہے۔اس کی اچھائی کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ یہاں کے رہنے والے بھی اس اچھائی سے بے خبر ہیں کیونکہ اچھائی کی زیادہ تشہیر کو ریاست مناسب نہیں سمجھتی۔لا تعداد ٹی وی چینیلز میں سے صرف پی ٹی وی کو یہ کارخیر کچھ حد تک سونپا گیا ہے اور اس ذمہ داری کو احسن طریقے سے نبھانے کے لئے پی ٹی وی کو ڈیپ سٹیٹ نے تحریک انصاف اور بیوروکریسی کے سپرد کیا ہے ،ان کی شبانہ روز محنت کے باعث شبانہ آنکھوں کا تارا اور پی ٹی وی سی این این اور بی بی سی سے زیادہ معتبر اطلاعات کا ذریعہ بن چکا ہے۔اصول یہ ہے کہ جو خبر پی ٹی وی نہیں دیتا وہ سچی ہوتی ہے اور جو دیتا ہے وہ ایمان کا حصہ ہوتی ہے کیونکہ اسلامی جمہوریہ± پاکستان کا سرکاری ٹی وی تاثر کے برعکس حکومت پہ تنقید کرنے میں مکمل آزاد ہے بشرطیکہ حکومت بھارت،بھوٹان،نیپال یا سری لنکا کی ہو۔عدلیہ تمام عوامی مقدمات کے زیر التوا فیصلے سنانے کے بعد گرین ویجیٹیبلز کی اقلیتوں کے ہاتھوں فروخت پر پابندی لگانے کے مقدمے کی سماعت کر رہی ہے تا کہ گوبھی ،گھیا اور کریلے جیسی مقدس سبزیوں کو ان کے شایان شان مرتبہ دیا جا سکے۔اس صورت میں بیروزگار ہونے والے افراد کے لئے بنوں کے تحصیل ناظم نے خاکروبوں کی آسامیوں کا اعلان بھی کر دیا ہے۔شانتی نگر کافی دنوں سے شانت ہے کیونکہ شر پسند عناصر کا صفایا کر دیا گیا ہے۔صاف پانی کی فراہمی کے لئے بڑے شہروں میں میٹرو بس سروس نے کام شروع کر دیا ہے تا کہ یہ بس استعمال کر کے شہری صاف پانی دکان سے خرید کر لا سکیں۔بجوں کو آوارہ گردی سے بچانے کے لئے پلے گراونڈز کو شادی ہالز اور تجارتی پلازوں میں تبدیل کر دیا گیا ہے تا کہ بچے کھیلنے کی جگہ پڑھائی میں دلچسپی لیں اور اس دلچسپی کو برقرار رکھنے کے لئے دانش سکولز کے پچھلے گراو¿نڈز میں لگائے گئے سستے تندور اہم کردار ادا کر رہے ہیں جہاں سے روٹی کھانے کے بعد طلباءاور اساتذہ ریاضی کی جماعت میں پانچ،سات اور ستر کے اعداد کی روحانی اہمیت کا مطالعہ کرتے ہیں۔بے پردہ اور بدکردار عورتوں کو جلانے کے لئے گندھک کے تیزاب کی قیمتوں میں کمی کی جا رہی ہے اور اسکے خلاف آواز اٹھانے والی شرمین عبید چنائے کو ملالہ سمیت بیرونی طاقتوں کا آلہ کار قرار دینے کے بیانیے پر حکومتی اراکین کی خاموشی عوام کے لئے واضح پیغام رکھتی ہے۔شراب جیسی حرام اور مکروہ چیز کی فروخت اور استعمال کی حوصلہ شکنی کے لئے فارن ایمبیسیز سے آنیوالے راستوں پر ناکے لگانے کے علاوہ اینٹی نارکوٹکس فورس اگلے سیزن میں نہروں کی بھل صفائی کا ٹھیکہ حاصل کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔سویلین ملٹری ریلیشن شپ کو بہتر بنانے کے لئے ساحر علی بگا جیسے ماہر موسیقاروں کی خدمات حاصل کر لی گئی ہیں کیونکہ موسیقی عداوتوں کو فرو کرنے میں معاون ہوتی ہے اور ویسے بھی مشرف کا سری لنکن ایڈوینچر اب قصہ پارینہ بن چکا ہے۔اور اب صرف کانوں میں یہی گونجتا ہے آو± آج اس ظلم کے بازار میں پابجولاں چلو دست افشاں چلو مست رقصاں چلو خاک برسر چلو خوں بداماں چلو راہ تکتا ہے سب شہر جاناں چلو حاکم شہر بھی مجمع± عام بھی تیر الزام بھی سنگ دشنام بھی ان کا دم ساز اپنے سوا کون ہے شہر جاناں میں اب باصفا کون ہے دست قاتل کے شایاں رہا کون ہے رخت دل باندھ لو دل فگارو چلو پھر ہمیں قتل ہو آئیں یارو چلو۔


ای پیپر