حکومت  خواجہ آصف کو گرفتار کر کے ہمیں دھمکانا چاہتی ہے، مریم نواز
29 دسمبر 2020 (21:17) 2020-12-29

لاہور :  مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے خواجہ آصف کی گرفتاری کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ خواجہ آصف کو گرفتار نہیں بلکہ انہیں اغوا کیا گیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق مریم نواز نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ خواجہ آصف کی گرفتاری سے صاف نظر آرہا ہے کہ حکومت گھبراہٹ کا شکار ہے۔ نیب پر تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نیب عمران خان کاآلہٰ کاربن کربغیر کسی کیس کےلوگوں کوگھروں سےاٹھالیتاہے۔

خواجہ آصف پارٹی کے مشاورتی اجلاس میں شریک تھے ۔  اجلاس سے نکلنے کے بعد نیب نے خواجہ آصف کو گرفتار کرلیا۔ انہوں نے کہا کہ  خواجہ آصف نے بتایا کہ ٹی وی شو کی ریکارڈنگ کیلئے جار ہےہیں۔ خواجہ آصف کو نیب نے گلی کے کونے  سے گرفتار کرلیا۔ مسلم لیگ ن کی صدر مریم نواز نے کہا کہ  حکومت کے جانے کا خوف ان کے چہروں اور پریس کانفرنسز میں بھی نظر آرہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ شکست سے خوفزدہ ہوکر ایسے فیصلے کیے جارہے ہیں۔  

انہوں نے کہا کہ خواجہ آصف  کو گرفتار نہیں  اغوا کیا گیا ہے۔ خواجہ آصف کی گرفتاری سے حکومت کی بوکھلاہٹ واضح ہے ۔  خواجہ آصف نے بتایا کہ انہیں نوازشریف کو چھوڑنے کا کہا گیا۔ خواجہ آصف نےانہیں کہامیں ہرطرح کےرد عمل کیلئے تیار ہوں آپ کوجوکرنا ہے کریں۔ خواجہ آصف نے کہا میں نوازشریف کے بیانیے کے ساتھ کھڑا ہوں۔ مریم نواز نے کہا کہ عدلیہ سےکہوں گی کہ قوم کی نظریں آپ کی طرف دیکھ رہی ہیں۔ قوم کوانصاف دینا عدلیہ کی ذمہ  داری ہے۔ 

نیب پر تنقید کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ نیب عمران خان کاآلٰہ کاربن کربغیر کسی کیس کےلوگوں کوگھروں سےاٹھالیتاہے۔ نیب کو آٹا، چینی ایل این جی چور نظر نہیں آرہے ۔ کیا نیب اتنے دباؤ میں ہے کہ بلین ٹرین منصوبہ بھی نظر نہیں آتا؟ انہوں نے کہا حکومت  خواجہ آصف کو گرفتار کر کے ہمیں دھمکانا چاہتی ہے۔ خواجہ آصف کو چھوڑنا پڑے گا ورنہ حالات کہاں سے کہاں جا سکتے ہیں۔ مریم نواز نے کہا کہ پنجاب اسمبلی  کے  160 میں سے 159 ارکان اسمبلی کے استعفے میرے پاس آچکے ہیں۔ 


ای پیپر