Source : File Photo

نیب نے پیپلز پارٹی کے اہم رہنما بابل بھیو کو گرفتار کر لیا
29 اگست 2018 (21:40) 2018-08-29

کراچی : عدالت میں منی لانڈرنگ کیس زیر سماعت ہے اور اس میں گرفتاریاں بھی کی جا رہی ہیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق نیب نے پاکستان پیپلز پارٹی کے اہم رہنما کو گرفتار کر لیا ہے۔ نیب نے نے شکار پور میں پیپلز پارٹی کے رہنما بابل بھیو کو آج کو گرفتار کرلیا۔ بال بھیو نے ذاتی ملازمین کے جعلی اکاونٹس کھلوائے اور کروڑوں روپے رشوت جمع کرائی۔ بابل بھیو کے معاملے کی ایک سال سے نیب میں انکوائری جاری تھی۔

نیب نے بابل بھیو سے تفتیش شروع کردی ہے۔تاہم بابل بھیو کا کہنا ہے کہ مجھے پر لگائے گئے الزامات جھوٹے اور بے بنیاد ہیں،یہ معاملہ 2016 کا ہے میں خود نیب آفس گیا تھا،ان کیسز کا مقصد ہماری پارٹی کے صدر کو دھمکانا ہے۔میرے اکاوئنٹ میں 56 لاکھ کی ٹرانزیکشن ہوئی ہے جس کا کیس بنایا ہے، بابل بھیو نے سوال کیا کہ نیب 5 کروڑ سے کم کا کیس نہیں بنا سکتی اس کیس کی کیسے تحقیقات کرسکتی ہے؟۔جبکہ دوسری طرف منی لانڈرنگ کیس کے مرکزی ملزم انور مجید کے 3 بیٹے عدالت میں پیش ہوئے۔عدالت نے نمرمجید،ذوالقرنین اور علی مجید کی عبوری ضمانت منظورکرلی۔

بینکنگ کورٹ نے ملزمان کو 5 ، 5 لاکھ روپے کے مچلکے جمع کرانے کا حکم دیا ہے۔جب کہ عدالت نے ملزمان کو 4ستمبر کو عدالت میں پیش ہونے کا حکم دیا ہے۔یاد رہے سابق صدر آصف علی زرداری اور ان کی بہن فریال تالپور نے منی لانڈرنگ کیس میں عبوری ضمانت لے رکھی ہے۔چیف جسٹس نے ڈپٹی اٹارنی جنرل سے استفسار بھی کیا تھا کہ س عدالت نے آصف زرداری اور فریال تالپور کو حفاظتی ضمانت دی ؟۔ تاہم آج نیب نے پیپلز پارٹی کے اہم رہنما بابل بھیو کو گرفتار کر لیا ہے۔ پی پی رہنمابابل بھیو کا موقف ہے کہ ان کیسز کا مقصد ہماری پارٹی کے صدر کو دھمکانا ہے۔ نیب 5 کروڑ سے کم کا کیس بنا ہی نہیں سکتی۔


ای پیپر