مسلم لیگ ن کے عمران خان سے اہم مطالبات
29 اپریل 2019 (19:58) 2019-04-29

اسلام آباد:پاکستان مسلم لیگ ( ن) کی مشترکہ پارلیمانی پارٹی نے وزیراعظم عمران خان سے9مطالبات کردئیے ، جن میں کہا گیا کہ وزیراعظم کابینہ میں ردوبدل اور آئی ایم ایف کی شرائط، ادویات کی قیمتوں میں ظالمانہ اضافہ ، ادویات سکینڈل میں کرپشن کرنےوالے وزیر کی کارکردگی اور انہیں وزارت سے نکالنے کی تفصیلات ،نیشنل ایکشن پلان پر بریفنگ ،آئی ایم ایف کے ساتھ ایل این جی کی کیا تفصیل اور شرائط طے ہوئیں؟ سابق وزیراعظم نوازشریف اور ( ن)لیگی وزراءکو فوری رہا کیا جائے۔

پیر کو پاکستان مسلم لیگ ( ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب کے مطابق مسلم لیگ ( ن) کے ارکان قومی اسمبلی اور سینیٹ کا مشترکہ اجلاس ہوا۔ اجلاس میں پارٹی کی سینئر قیادت اور اراکین پارلیمان نے شرکت کی ۔اجلاس میں پاکستان مسلم لیگ ( ن) کی مشترکہ پارلیمانی پارٹی نے وزیراعظم عمران خان سے9 مطالبات کردئیے ۔ مسلم لیگ ( ن)کی مشترکہ پارلیمانی پارٹی نے وزیراعظم سے مطالبہ کیا کہ وزیراعظم عمران خان پارلیمان میں آکر کابینہ میں ردوبدل اور آئی ایم ایف کی شرائط، ایل این جی پرشرائط کا جواب دیں، گیس بلوں میں جعلسازی اور عوام کو لوٹنے کی تفصیل جس ڈاکے کا اعتراف خود حکومت نے کیا ہے ،وزیراعظم ایوان میں آکر اس کی تفصیلات فی الفور پیش کریں،ادویات کی قیمتوں میں ظالمانہ اضافہ کی مذمت، ادویات سکینڈل میں کرپشن کرنے والے وزیر کی کارکردگی کی تفصیلات وزیراعظم ایوان میں آکر بتائیں ۔

وزیراعظم ایوان میں آکرقوم کو بتائیں کہ وزرانے قومی مفاد کے خلاف کیا کام کیا؟ انہیں کیوں نکالا گیا؟ کرپشن کی تفصیل بتائیں ؟ پاکستان مسلم لیگ ( ن)نے مزید مہنگائی کے حکومتی اقدامات کی بھرپور مزاحمت کرنے اور بجٹ کی ڈٹ کر مخالفت کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم کا کوئی معاشی وژن نہیں،ایوان میں آکر بجٹ کی تفصیل بتائیں، عوام دشمن اقدامات والا بجٹ قبول نہیں کریں گے ۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ رمضان المبارک کے پیش نظر غریب عوام اور تنخواہ دار طبقات کو تین ہزار روپے تنخواہ میں فوری اضافہ کا ریلیف دیں،قائد حزب اختلاف شہبازشریف کے مطالبہ پر فوری عمل کیاجائے ، بدترین مہنگائی نے غریبوں کا روزہ رکھنا مشکل بنادیا ہے ،نیشنل ایکشن پلان (این اے پی) پر ایوان میں فوری بریفنگ دی جائے۔

حکومت اس حساس معاملے میں غفلت ، تاخیر اور کوتاہی کا مظاہرہ نہ کرے ،سابق وزیراعظم نوازشریف کو فوری رہا کیا جائے، ان کا علاج بلا تاخیر ہونا چاہئے،حکومت کا سابق وزیراعظم محمد نواز شریف کی صحت پر سیاست کرنا قابل مذمت ہے، عمران خان حکومت محمد نواز شریف کی صحت کے معاملے میں عدالت میں پہلے ہی جھوٹی ثابت ہو چکی ہے،آئی ایم ایف کے ساتھ ایل این جی کی کیا تفصیل اور شرائط طے ہوئی ہیں، قوم اور ایوان کو بتائی جائیں۔اجلاس میں خواجہ سعد رفیق، خواجہ سلمان رفیق، کامران مائیکل، حافظ نعمان، فواد احمد فواد اور احد چیمہ سے یک جہتی کا اظہارکیا گیا اور کہا گیا کہ سیاسی انتقام کی سیاہ رات ختم ہوکر رہے گی،سیاسی انتقام کا نشانہ بننے والے ان افراد کے خلاف نیب کچھ ثابت نہیں کرسکا، کسی کی ضد، انا اور خوشنودی کے لئے ان کی گرفتاری ظلم ہے، رہا کیاجائے۔

مسلم لیگ ( ن)کی مشترکہ پارلیمانی پارٹی نے وزیراعظم سے پارٹی کی سینٹرل آرگنائزنگ کمیٹی کے رکن اور سابق رکن قومی اسمبلی شہاب الدین کے بیٹے جلال الدین کی ضلع بدری اور گرفتاری کی مذمت ، فوری رہائی کا بھی مطالبہ کیا۔پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں پارٹی قائد اور سابق وزیراعظم محمد نواز شریف کی صحت یابی کےلئے خصوصی دعا کی گئی ۔اجلاس میں پارلیمانی پارٹی نے پنجاب اسمبلی میں ( ن) لیگ کے ارکان کی معطلی کی مذمت کی اور ملک کی معاشی صورتحال اور عدم استحکام پرگہری تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ مہنگائی اور افراط زر کی شرح 10 فیصد پر پہنچنا حکومت کی نالائقی اور نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے،حکومت وفاقی اور صوبائی سطح پر سیاسی اختلافی رائے رکھنے والوں کی زبان بندی کے لئے حکومتی اختیارات استعمال کر رہی ہے ،حکومت کا آمرانہ رویہ خود اس کے لیے تباہ کن ہے، ایسے اقدامات عدم استحکام میں مزید اضافے کا باعث ہیں ،اپوزیشن قوم کی آواز پارلیمان میں بلند کرتی اور حکومت کی نالائقی اور نااہلی کو بے نقاب کرتی رہے گی۔


ای پیپر