قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی کا پاک فوج کیساتھ اظہار یکجہتی
28 May 2019 (18:36) 2019-05-28

اسلام آباد: قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے دفاع نے شمالی وزیر ستان میں پاک فوج کی چیک پوسٹ پر حملہ کی متفقہ طور پر مذمت کی اور پاک فوج کے ساتھ مکمل یک جہتی کا اظہار کیا اور آئندہ اجلاس شمالی وزیرستان کرنے کا فیصلہ کیا، کمیٹی نے سیکرٹری خزانہ کے اجلاس میں عدم حاضری پر شدید برہمی کا اظہار کیا، کمیٹی کو سیکرٹری دفاع لفٹینٹ جنرل(ر)اکرام الحق نے ا ٓگاہ کیا ہے کہ پاک فوج کی چیک پوسٹ پر حملہ افسوسناک ہے اور کسی کو بھی ریاست کی رٹ کو چیلنج کرنے نہیں دیں گے ، ،قبائلی علاقوں میں امن کے لئے صرف فوج نہیں قبائلیوں کی بھی قربانیاں ہیں، پی ٹی ایم کے دھرنہ دینے والوں نے ایک شخص کی رہائی کے بدلے میں دھرنہ ختم کرنے کا فیصلہ کر لیا تھا اور دھرنہ دینے والوں سے مذاکرات کامیاب ہو گئے لیکن محسن داوڑ اور علی وزیر نے انہیں فون کر کے کہا کہ دھرنہ ختم نہ کیا جائے-

  قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے دفاع کا اجلاس کمیٹی چئیرمین امجد خان کی زیر صدارت ہوا۔ اجلاس میں کنٹونمنٹ بورڈ ز حکام نے کمیٹی کو کنٹونمنٹ بورڈ ز کے امور پر بریفنگ دی۔اجلاس میں سیکرٹری دفاع لفٹینٹ جنرل(ر)اکرام الحق نے پی ٹی ایم دھرنے اور پاک فوج کی چیک پوسٹ پر حملے کے حوالے سے کہاہے کہ دھرنہ دینے والوں نے ایک شخص کی رہائی کے بدلے میں دھرنہ ختم کرنے کا فیصلہ کر لیا تھا۔

انہوں نے بتایا ہے کہ دھرنہ دینے والوں سے مذاکرات کامیاب ہو گئے اور انہوں نے دھرنہ ختم کرنے کا فیصلہ کر لیا تھا لیکن محسن داوڑ اور علی وزیر نے انہیں فون کر کے کہا کہ دھرنہ ختم نہ کیا جائے۔ سیکرٹری دفاع لیفٹینینٹ جنرل ریٹائرڈ اکرام الحق نے آ گاہ کیاکہ دوگا گاوں سے ہماری چیک پوسٹ پر گزشتہ مہینے دو بار حملہ ہوا۔ہم نے 25 مئی کو دو مشتبہ افراد گرفتار کئے۔26 مئی کو پی ٹی ایم کے لوگوں نے دھرنا دے دیا ۔دونوں ایم این ایز وہاں پہنچے اور سیکیورٹی فورسز سے جھگڑا کیا۔دونوں کی سربراہی میں پہلے چیک پوسٹ پر پتھراو ہوا اور پھر فائرنگ کی گئی ۔فائرنگ سے ہمارے 5 جوان زخمی ہوئے لیکن ہم نے تحمل کا مظاہرہ کیا ۔بعد میں اس گروہ نے چیک پوسٹ پر حملہ کر دیا جس کا جواب دینا پڑا ۔

پاک فوج کی چیک پوسٹ پر حملہ افسوسناک ہے اور کسی کو بھی ریاست کی رٹ کو چیلنج کرنے نہیں دیں گے۔ریاست کی رٹ چیلنج کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔قبائلی علاقوں میں امن کے لئے صرف فوج نہیں قبائلیوں کی بھی قربانیاں ہیں۔چیئرمین کمیٹی برائے دفاع امجد علی خان نے کہاکہ چند افراد کو امن خراب کرنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔چیک پوسٹ پر حملہ افسوسناک اور ناقابل قبول ہے ۔ہم اپنی فورسز کے ساتھ کھڑے ہیں کسی کو قبائلی علاقوں کا امن خراب نہیں کرنے دیں گے۔ قومی فوج کے ساتھ نہیں کھڑی ہو گی تو یہ باعث شرمندگی ہے ۔فاٹا کا دورہ کریں گے وہاں کے لوگوں سے ملیں گے۔ کمیٹی اراکین نے مسلح افواج سے مکمل اظہار یہ جہتی کیا ۔پی ٹی ایم کے چیک پوسٹ پر حملے کی مزمت کی۔


ای پیپر