کرونا وائرس کی سازش کے پیچھے چھپے خوفناک محرکات ،تہلکہ خیز انکشافات سامنے آگئے
28 مارچ 2020 (18:16) 2020-03-28

اسلام آباد: کرونا کی سازش کےپیچھے کون سے محرکات ہیں ، انکشافات نے پوری دنیا میں ہلچل مچا کر رکھ دی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق ماہرین کا کہنا تھا کہ کرونا کوئی قدرتی وبا نہیں بلکہ لیبارٹری میں تیارکیا جانے والا خطرناک ترین وائرس ہے ،جسے اس وقت عالمی طاقتیں اپنے گھنائونے مقاصد کیلئے استعمال کر رہی ہیں ۔

معلومات و حقائق سے واقفیت رکھنے والے سائنس دان اور ماہرین کا دعوی ہے کہ یہ قدرتی طورپر پھیلنے والا وائرس نہیں بلکہ لیبارٹری سے تیار شدہ ہے اور اس کا مقصد لوگوں میں خوف وہراس کا ماحول پیدا کرنے کے ساتھ ساتھ چند بڑی یورپین طاقتوں کے عالمی،سیاسی و اقتصادی ایجنڈا کو پورا کرنا ہے جبکہ یہ رپورٹس بھی ہیں کہ کورونا وائرس کے علاج کے لئے ویکسیئن اسرائیل میں تیار کی جارہی ہے جس نے دنیا پر واضح کر دیا ہے کہ ان ممالک کو ویکسیئن نہیں دی جائے گی جو اسکے وجود کو تسلیم نہیں کرتے۔

جان لیوا کورونا وائرس نے دنیا بھر کے ممالک کواپنی لپیٹ میں لے کر خوف وہراس پھیلا رکھا ہے تاہم اس وباء کے پھوٹنے کے حوالے سے بے شمار نظریات سامنے رہے ہیں ، اس حوالے سے میڈیارپورٹس کے مطابق وائٹ ہاؤس کی ویب سائٹ پر 10مارچ2020ء کو فورٹ ڈیٹرک کی معلومات کے حوالے سے ایک پٹیشن جاری کی گئی اس پٹیشن میں کئی ایک مشکوک واقعات کا ذکر کیا گیا ہے جو اس نتیجے پر پہنچتے ہیں کہ کووڈ۔19 امریکہ میں سی آئی اے کی حیاتیاتی ہتھیار بنانے والی فورٹ ڈیٹرک لیبارٹری میں تیار کیا گیا تھا۔


ای پیپر