میرے خلاف کیس کے پیچھے بہت سی قوتیں ہیں:نواز شریف
28 مارچ 2018 (16:08) 2018-03-28

اسلام آباد :احتساب عدالت کے باہر گفتگو کرتے ہوئے نواز شریف نے چیف جسٹس کو کہا کہ وہ کام نہ کریں جو آپ کو نہیں کرنے چاہیں ۔گزشتہ روز چیف جسٹس اور وزیر اعظم کی ملاقات کے حوالے سے انہوں نے کہا ابھی اس بارے کچھ نہیں کہہ سکتا ۔سو موٹو ایکشن نے حکومتی کردار کو اپنے ہاتھ میں لے لیا ہے ۔چیف جسٹس وہ کام کریں جن میں 18لاکھ مقدمات زیر التوا ءہیں ۔چیف جسٹس اس طرف بھی توجہ دیں ۔اس مقدمہ تو سزا نہیں ہو سکتی ۔ میرے مقدمے کے پیچھے بہت ساری قوتوں کا ہاتھ ہے ۔

چیف جسٹس کے ہسپتالوں کا دورہ کرنے کا مقصد ہم پر ہاتھ ڈالنا تھا ۔بھاگنے والا نہیں، نہ ایسا کبھی سوچا، اس بار کسی اور کو ملک سے باہر جانا چاہیئے۔ ان کا کہنا تھا گواہ کے ایک ایک بیان نے ہمارے خلاف الزامات کو دھو دیا، یہ مقدمہ بدعنوانی کا نہیں، سیاسی بھی نہیں بلکہ فراڈ ہے، یہ فراڈ میرے اور میری فیملی کے ساتھ ہو رہا ہے۔ نواز شریف نے کہا میرے خلاف کیس ایک فراڈ ہے بیوی بیمار ہے اور مجھے باہر نہیں جا نے دیا جار ہا ۔ نواز شریف کا کہنا تھا کہ میرے خلاف کیس کے پیچھے بہت سے قوتیں ہیں ، کیس میں سے کچھ نہیں نکل رہا تو مخالفین کو شرمندگی ہونی چاہیے.

اب اگر مجھے ہر صورت سزا دینی ہی ہے تو میرا نام کوٹیکنا، حج اسیکنڈل ،ای او بی آئی کرپشن کیس میں ڈال دیں، یہ تماشا زیادہ دیر تک نہیں چل سکتا۔سابق وزیراعظم نے مزید کہا کہ اللہ کے فضل سے بھاگنے والے نہیں، آج حقائق سامنے آ گئے ہیں ، ہمارے خلاف جس نے بھی مقدمہ دائر کیا ان کو شرمندگی ہونی چاہیے، عدالت میں فراڈ ثابت ہوتا جا رہا ہے، اس مقدمے میں سزا نہیں دی جا سکتی، مقدمہ منطقی انجام تک پہنچ رہا ہے، اللہ تعالیٰ سرخرو کر رہاہے، کیس کے تمام گواہان کے بیانات ہمارے حق میں جارہے ہیں ، جو تماشا لگا ہے، زیادہ دیر تک نہیں چل سکتا۔


ای پیپر