PM Imran Khan Big Statement
28 جنوری 2021 (18:44) 2021-01-28

اسلام آباد :ڈاکو مینٹری ڈرامہ’’پانی کے پنکھ ‘‘کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ سابقہ حکومتوں نے ملک کی ترقی کیلئے کوئی خاص اقدامات نہیں کیے ،سابقہ حکومتوں نے ڈیم بنانے کی بجائے الیکشن کمپین پر زیادہ پیسے لگائے ،انہوں نے کہا 50 سال بعد دو بڑے ڈیم بن رہے ہیں ،وقت پر ڈیم بنائے ہوتے تو 70ہزار میگاواٹ بجلی کی گنجائش ہوتی ۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کوئی بھی ملک طویل مدتی منصوبوں سے ترقی کرتے ہیں ،مخالفین کہتے ہیں کہ ہم نے پاکستان کے قرضے بڑھا دئیے ،ہم جب حکومت میں اائے تو پاکستان پر 25 ہزار ارب قرض تھا ،11 ہزار ارب روپے میں سے 6 ہزار ارب روپے قرضوں کی قسطوں میں گئے ،روپے کی قیمت کم ہونے سے 3ہزار ارب روپے قرض بڑھا ،انہوں نے کہا دنیا میں عزت اس کی ہوتی ہے جو خودار ہوتا ہے ،ہم نے ایک خودار پاکستان کی طر ف جانا ہے ۔

وزیر اعظم نے مزید کہا 2 ہزار ارب میں سے 800 ارب روپے عالمی وبا کی وجہ سے ٹیکس کلیکشن کم ہوا ،سابقہ حکومتوں کے دور میں ہم نے غلطیاں کیں ،جنگ کسی اور کی تھی جس میں ہمیں شامل نہیں ہونا چاہیے تھا ،ماضی کی غلطیوں کی وجہ سے بجلی مہنگی کرنا پڑی ،سابقہ حکومتوں نے ایسے بجلی کے ایسے معاہدے کیے جس کی وجہ سے بجلی خرچ کریں یا نہ کریں لیکن پھر بھی پیسے دینا پڑتے ہیں ،سابقہ حکمرانوں نے ملک میں ڈیم بنانے کی بجائے الیکشن کی منصوبہ بندی کی ۔

وزیر اعظم نے کہا مشرف کے دنوں میں روشن خیالی کا لفظ پہلی بار سنا ،روشن خیالی دوسری قوموں کو خوش کرنے کیلئے تھی ،پاکستان نے ہمیشہ دوسروں کی جنگ میں شرکت کر کے غلطی کی تھی ،پاکستان کا نائن الیون سے کوئی تعلق نہیں تھا ،پاکستان کو ایک خوددار ملک بنانا ہے ،کیونکہ خوددار ملک ہی کی پوری دنیا میں عزت ہو تی ہے ۔


ای پیپر