سانحہ ساہیوال کی پوسٹ مارٹم رپورٹ نے سی ٹی ڈی کا پول کھول دیا
28 جنوری 2019 (20:40) 2019-01-28

لاہور : سانحہ ساہیوال میں مارے جانے والے افراد کی پوسٹمارٹم رپورٹ میں سنسنی خیز انکشافات سامنے آگئے ،حیران کن طور پر مرنے والے چاروں افراد کے سر میں گولی ماری گئی ۔

تفصیلات کے مطابق اس سانحہ میں مرنے والے افراد پر 34گولیاں برسائی گئیں ، پوسٹ مارٹم رپورٹ  کے مطابق خلیل کو 11 گولیاں ماری گئیں جن میں سے ایک سر میں بھی لگی ،انتہائی ظالمانہ انداز میں 34 گولیاں چلائی گئیں ،13 سالہ اریبہ کو 6 گولیاں لگیں جس سے اس کی پسلیاں ٹوٹ گئیں،نبیلہ کو بھی ایک گولی سر میں ماری گئی ،ذیشان کو 13 گولیوں کا نشانہ بنا یا گیا ،ذیشان کے سر میں لگنے والی گولی سے سر کی ہڈیا ں باہر آگئیں ۔

رپورٹ کے مطابق6 سال کی منیبہ کے ہاتھ میں شیشہ نہیں گولی لگی تھی،منیبہ کےدائیں ہاتھ میں سامنےسےگولی لگی اور پار ہو گئی، عمیر کی دائیں ران میں گولی لگی اور آر پار ہوگئی، رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ چاروں افراد کو بہت قریب سے گولیاں ماری گئیں۔ قریب سے گولیاں مارنے کی وجہ سے چاروں لوگوں کی جلد مختلف جگہ سے جل گئی تھی۔


ای پیپر