افریقہ کیساتھ 5ارب ڈالر سالانہ تجار ت کا ہدف
28 فروری 2018 (21:57)

اسلام آباد: اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے ٹریڈ ڈولپمنٹ اتھارٹی آف پاکستان اور وزارت تجارت کے تعاون سے Look Africa پالیسی پر ایک سمینار منعقد کیا جس کا مقصد افریقی ممالک کے ساتھ پاکستان کی تجارت و برآمدات کو بہتر کرنے کے نئے امکانات کا جائزہ لینا تھا۔ سمینار میں نائیجریا، کینیا، لیبیا، مراکش، سوڈان، تیونس، ماریشس اور مصر کے سفراءنے بھی شرکت کی۔ وزارت تجارت کی جوائنٹ سیکرٹری محترمہ ماریہ کاضی اور ٹریڈ ڈولپمنٹ اتھارٹی آف پاکستان کے ڈائریکٹر خالد رسول بھی اس موقع پر موجود تھے۔سمینار سے خطاب کرتے ہوئے اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر شیخ عامر وحید نے کہا کہ 54افریقی ممالک پر مشتمل براعظم افریقہ ایک ارب سے زائد افراد کی بڑی مارکیٹ ہے اور پاکستان کیلئے اس خطے کے ساتھ تجارت و برآمدات کو فروغ دینے کے بے شمار مواقع موجود ہیں۔


انہوںنے کہا کہ حکومت تجارتی وفود کو افریقی ممالک کا دورہ کرنے کیلئے سپانسر کرے تا کہ وہ اس خطے کے ساتھ تجارت و برآمدات کو بہتر کرنے کے نئے مواقع تلاش کر سکیں۔ انہوں نے کہا کہ افریقہ کی کل تجارت تقریبا1کھرب ڈالر تک ہے لیکن پاکستان کی افریقہ کے ساتھ تجارت صرف 3ارب ڈالر ہے جو بہت کم ہے۔ انہوںنے کہا کہ حکومت نجی شعبے کو افریقی ممالک میں تجارتی نمائشیں لگانے کیلئے خصوصی مراعات فراہم کرے تاکہ پاکستان کی زیادہ سے زیادہ مصنوعات کو اس خطے میں متعارف کرایا جا سکے۔انہوں نے کہا کہ افریقہ کے صرف 15ممالک میں پاکستان کے سفارتخانے موجود ہیں لہذا انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ حکومت افریقہ کے تمام اہم ممالک میں اپنے سفارتخانے کھولنے پر توجہ دے جس سے تجارتی و اقتصادی تعلقات کو بہتر کرنے میں معاونت ملے گی۔

وزارت تجارت کی جوائنٹ سیکرٹری محترمہ ماریہ کاضی نے کہا کہ افریقی ممالک میں پاکستان کی سنگلر کنٹری نمائشیں منعقد کرنے کی کوشش کی جائے گی تا کہ ہماری مزید مصنوعات کو وہاں متعارف کرایا جائے۔ ٹریڈ ڈولپمنٹ اتھارٹی آف پاکستان کے ڈائریکٹر خالد رسول نے کہا کہ حکومت نے آئندہ پانچ سالوں میں افریقہ کے ساتھ پاکستان کی موجودہ 3ارب ڈالر کی تجارت بڑھا کر 5ارب ڈالر سالانہ تک لے جانے کا ہدف رکھا ہے۔


ای پیپر