خطے کی بدلتی صورتحال ،افغان صدر اشرف غنی کی پاکستان کو اہم پیشکش
28 فروری 2018 (21:32) 2018-02-28

کابل :پاک افغان بارڈر کی کشیدہ صورتحال کے بعد افغانستان کے صدر اشرف غنی نے کہا ہے کہ ہمیں ماضی کو بھلا کر مثبت سمت میں آگے کی طرف بڑھنا ہے ۔خبر رساں ادارے کے مطابق افغانستان میں دوسری کابل کانفرنس کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صدر اشرف غنی نے کہا کہ ہمیں ایک نئے باب کا آغاز کرنا ہو گا ۔

افغان صدر نے طالبان کو مذاکرات اور کابل میں دفتر کھولنے کی بھی پیشکش کی ۔ اشرف غنی نے کہا کہ طالبان خطے میں امن کے لئے مذکرات میں شریک ہوں اور ہتھیار ڈال کر حکومت کے ساتھ مل جل کر افغانستان کو بچائیں، کابل حکومت کے ساتھ تعاون کرنے والے طالبان اور ان کے اہلخانہ کو پاسپورٹ اور ویزا فراہمی کا عمل بھی شروع کردیا جائے گا، مذاکرات میں پیش رفت کی خاطر پرامن طالبان کے لیے کابل میں خصوصی دفتر بھی کھولا جائے گا جب کہ طالبان رہنماو¿ں پر عائد پابندیاں بھی اٹھالی جائیں گی، امن اب طالبان کے ہاتھوں میں ہے۔

واضح رہے کہ کابل کانفرنس میں 25 سے زائد ممالک کے مندوب اور مختلف تنظیموں کے نمائندے شرکت کر رہے ہیں جن میں اقوام متحدہ اور نیٹو بھی شامل ہیں۔


ای پیپر