Pakistan Army, part, politics, Sheikh Rasheed, Federal Minister
28 دسمبر 2020 (15:21) 2020-12-28

اسلام آباد: وزیر داخلہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ پاک فوج سیاست میں حصہ دار نہیں، نہ ہے اور نہ ہی ہوگی ، پاک فوج جمہوریت کے ساتھ تھی، ہے اور رہے گی۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ نواز شریف کے پاسپورٹ کی آخری تاریخ کب ختم ہوگی ابھی نہیں دیکھا ، انہوں نے واضح کیا کہ وزیراعظم کا ایک ہی مؤقف ہے مذاکرات ہوں یا نہ ہوں، این آر او نہیں ملے گا۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ عوام کو یادداشت پر زور دینا چاہئے کہ ماضی کے حریف آج کیسے حلیف ہیں ، دونوں جماعتوں نے قوم کے 20 سال ایک دوسرے کیخلاف لڑنے میں ضائع کئے۔ عوام دیکھیں گے یہ استعفے بھی نہیں دیں گے۔ ابھی ہدایت نہیں ملی ان کیلئے استقبالیہ کیمپ کہاں اور کیسے لگانے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ لانگ مارچ اور لونگ مارچ میں فرق ہوتا ہے ، پوری امید ہے اپوزیشن سینیٹ الیکشن میں حصہ لے گی ، اگر اپوزیشن سینیٹ الیکشن میں حصہ لیتی ہے تو یہ اچھی بات ہے۔

شیخ رشید نے کہا کہ کل آصف زرداری نے جیل بھرنے کی بات کی ہے ، آصف زرداری جیل میں رہنے کا زیادہ تجربہ رکھتے ہیں ، آصف زرداری نے کریمنالوجی میں پی ایچ ڈی کی ہے۔

آصف زرداری جانتے ہیں جیل کی سختیوں سے کیسے بچنا ہے ، ان کی زیادہ تر لڑائی وزیراعظم کی بجائے نیب سے ہے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کوئی بھی فیصلہ کرسکتے ہیں یہ ان کی صوابدید ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ یکم جنوری سے تمام گاڑیاں ایک دن میں رجسٹرڈ ہوں گی ، ای اسٹیمپنگ شروع کرنے کی ہدایت کی ہے۔ اسلام آباد کی اسٹیمپ ڈیوٹی 2 فیصد ہے ، پورے ملک میں اسٹیمپ ڈیوٹی ایک فیصد ہے۔ 8 محکموں کو آپس میں ضم کرنے کا فیصلہ کیا ہے ، تمام محکموں کا دورہ کر رہا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ فوڈ نائٹ بازار کھولنے کا فیصلہ کیا ہے ، یہ فوڈ نائٹ بازار ساری رات کھلے رہیں گے۔ اسلام آباد میں پٹوار خانے کو مکمل ختم کر دیں گے۔


ای پیپر