Pakistan, access, Central Asia, Afghanistan, Abdul Razzaq Dawood
28 دسمبر 2020 (13:28) 2020-12-28

اسلام آباد: مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد نے کہا کہ افغانستان کے ساتھ ہر طرح سے رابطے چاہتے ہیں ، چاہتے ہیں ایک دوسرے کی گڈز اور گاڑیوں کو مکمل رسائی دیں۔ چاہتے ہیں افغانستان کے راستے سینٹرل ایشیا تک رسائی ہو۔

پاکستان افغانستان ٹرانزٹ ٹریڈ کو آرڈی نیشن اتھارٹی کا اجلاس ، جس کی صدارت دونوں ممالک کے وزرائے تجارت کر رہے ہیں۔ ٹرانزٹ ٹریڈ اتھارٹی کا اجلاس 3 روز جاری رہے گا۔

ٹرانزٹ ٹریڈ اتھارٹی کے افتتاحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد نے کہا کہ کل ازبکستان کے وزیر ٹرانسپورٹ بھی آرہے ہیں، علاقائی تعاون کے فروغ کیلئے مثبت اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی تجارت میں کمی آئی ہے لیکن گزشتہ دو ماہ سے اس میں ریکوری ہے۔

افغان وزیر تجارت نثار احمد فیضی غوریانی نے افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ٹرانزٹ ٹریڈ اتھارٹی اجلاس کے انعقاد پر پاکستان کے شکرگزار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اشرف غنی سمجھتے ہیں پاکستانی سرمایہ کار افغانستان میں سرمایہ کاری کریں، ہم ورلڈ ٹریڈ آرگنائزیشن کے مطابق چلنا چاہتے ہیں۔

افغان وزیر تجارت نے کہا ہم جنوبی ایشیائی مارکیٹ تک پاکستان کے راستے رسائی چاہتے ہیں ، انہوں نے کہا کہ ٹرانزٹ ٹریڈ سے متعلق تصفیہ طلب معاملات کا حل چاہتے ہیں۔ ہمیں دونوں ممالک کے بہتر مستقبل کیلئے حاصل مواقع سے فائدہ اٹھانا ہوگا۔

نثار احمد فیضی غوریانی نے کہا کہ بعض نازک معاملات حل طلب ہیں جن کا حل ہونا ضروری ہے۔ ہمیں آگے بڑھنے کیلئے ان معاملات کو حل کرنا ہوگا۔ افغانستان اور پاکستان مستقبل قریب میں دوطرفہ تجارتی معاہدے کو حتمی شکل دیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم پاکستان کے شکرگزار ہیں ، بہت سے معاملات حل ہوئے، کئی ابھی حل طلب ہیں۔


ای پیپر