سال 2018 میں کر کٹ کی دنیا کے بڑے بڑے ناموں نے ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا
کیپشن:   Source : File Photo + Facebook
28 دسمبر 2018 (21:12) 2018-12-28

اسلام آباد:2018میں بھارت کے 6، جنوبی افریقا کے 2، انگلینڈ کے 2، آسٹریلیا، ویسٹ انڈیز اورپاکستان کے 1 ،1 اور آئر لینڈ کی4 خواتین کرکٹرز دنیائے کرکٹ سے رخصت ہوئیں۔تفصیلات کے مطابق اگر سال 2018کو کرکٹرز کی ریٹائرمنٹ کا سال قرار دیا جائے تو غلط نہ ہوگا۔

بھارت کے چھ، جنوبی افریقا کے دو، انگلینڈ کے دو، آسٹریلیا، ویسٹ انڈیز اورپاکستان کے ایک ،ایک اور آئر لینڈ کی چار خواتین کرکٹرز دنیائے کرکٹ سے رخصت ہوئیں۔جنوبی افریقی فاسٹ بولرمورنے مورکل نے فروری 2018 میں انٹرنیشنل کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا فیصلہ کیا۔34سالہ کرکٹرنے ڈربن میں آسٹریلیا کیخلاف چار ٹیسٹ پر مشتمل سیریز کھیلنے کے بعد کرکٹ سے کنارہ کشی اختیار کی۔جنوبی افریقی فاسٹ بولر مورنے مورکل کے بعد ٹیم کے اہم کھلاڑی اے بی ڈی ویلیئرز نے کرکٹ کو الوداع کہہ کر ساری دنیا کو حیران کیا۔

کرکٹ کے اس شہنشاہ جنوبی افریقی پلیئرنے اپنے بام عروج میں پہنچنے کے بعداچانک یہ فیصلہ کیا۔34سالہ بیٹسمین نے 114ٹیسٹ،228 ایک روزہ انٹرنیشنل اور78ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کھیلنے کے بعد ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا۔انہوں نے 2004 میں انگلینڈ کیخلاف میچ سے کرکٹ میں ڈیبیو کیا۔ انہوں نےٹیسٹ کرکٹ میں 8765رنز بنائے جس میں 22سنچریاں اور 46نصف سنچریاں شامل ہیں۔ ون ڈے میں 9577 رنزاور ٹی ٹوئنٹی کرکٹ میں 1672رنز بنائے۔

بھارتی فاسٹ بولر ظہیر خان نے جون2018کوانٹرنیشنل اورفرسٹ کلاس کرکٹ سےریٹائرمنٹ لی۔بھارتی فاسٹ بولر ظہیر خان کے بعد محمد کیف نے بھی اسی سال کرکٹ کو خیرباد کہنے کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے بھی 2000 میں ٹیسٹ کرکٹ میں ڈیبیو کیا تھا۔بھارتی کھلاڑی آر پی سنگھ بھی تمام فارمیٹ کی کرکٹ سےریٹائر ہوگئے۔ 32سالہ لیفٹ آرم میڈیم پیسرآخری بار 2011میں انگلینڈ کیخلاف ون ڈے میچ میں نظر آئے تھے۔ انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان الیسٹر کک ستمبر2018کو بھارت کےخلاف 1-4سےٹیسٹ سیریز جیتنےکے بعددنیائے کرکٹ سے رخصت ہونے کا فیصلہ کیا ۔

پاکستانی لیگ اسپنر عبدالرحمن نے قومی سیلیکٹرز کی جانب سےمسلسل نظر انداز کرنےکے بعد بین الاقوامی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا تاہم وہ ڈومیسٹک کرکٹ میں ایکشن میں نظر آئیں گے۔ وہ ٹیم میں منتخب نہ ہونے کے وجہ سے سخت مایوس اور دلبرداشتہ تھے۔پروین کمار جنہوں نے 2007 تا 2012میں بھارتی کرکٹ ٹیم کی نمائندگی کی ، انہوں نے 32سال کی عمر میں تمام فارمیٹ سے ریٹائرمنٹ ہونے کا فیصلہ کیا۔ سابق انگلش بیٹسمین نک کامپٹن نے مختصر عرصے کے بعد بین الاقوامی کرکٹ میں انگلینڈ کی نمائندگی کے بعدکنارہ کشی اختیار کی۔ٹی ٹوئنٹی کرکٹ میں ویسٹ انڈیز کو دوبار عالمی چیمپئن بنوانے والے آل راونڈر ڈیوین براوواب عالمی کرکٹ کے میدان میں نظر نہیں آئیں گے۔

انہوں نے کرکٹ بورڈ کے رویے سے دلبرداشتہ ہوکر بالاخر انٹرنیشنل کرکٹ سے کنارہ کشی اختیارکی۔2011ورلڈ کپ کے فاتح بھارتی ٹیم کےفاسٹ بولر مناف پٹیل نے بھی تمام طرز کی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لے لی ۔ آسٹریلوی فاسٹ بولر جان ہیسٹنگز کو پھیپھڑوں کے مرض نے ان کو کرکٹ کے میدان سے دوررہنے پر مجبور کیا۔2011ورلڈ کپ کی فاتح بھارتی ٹیم کے بیٹسمین گھوتم گھمبیر نےکرکٹ بورڈ کے رویے سے مایوس ہوکر تمام طرز کی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا۔آئر لینڈ کی چارخواتین کرکٹرز کلارک شیلنگٹن، جڑواں بہنیں اسوبیل جوائس، سیلیا جوائس اور کائرہ میٹ کلفے نے 2018ورلڈ کپ کے بعد عالمی کرکٹ سے کنارہ کشی اختیار کرلی۔


ای پیپر