Source : Yahoo

ڈی پی اور پاکپتن کی معطلی سے بنی گالہ کا تعلق نہیں، فیاض الحسن چوہان
28 اگست 2018 (18:31) 2018-08-28

لاہور : وزیرِ اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ ڈی پی او پاکپتن رضوان گوندل کی معطلی پولیس کا اندرونی معاملہ ہے، ان کیخلاف کافی دیر سے شکایات موصول ہو رہی تھیں‘ہم انسان ہیں، فرشتے نہیں، ہم سے بھی غلطیاں اور کوتاہیاں ہونگی لیکن کوشش ہو گی جرائم نہ ہو‘گڈ گورننس اور پرفارمنس کے ذریعے قائد کا پاکستان بنائیں گے‘ خادمِ اعلیٰ کی طرح ٹوپی پہن کر بڑھکیں نہیں ماریں گے۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے فیاض الحسن چوہان کا کہنا تھا کہ ڈی پی او پاکپتن رضوان گوندل کے معاملے کی آئی جی پنجاب مکمل انکوائری کر رہے ہیں، بنی گالہ یا وزیرِاعلیٰ کا اس سے کوئی تعلق نہیں ہے، یہ پولیس کا اندرونی معاملہ ہے، ڈی پی او کیخلاف کافی عرصہ سے شکایات موصول ہو رہی تھیں۔وزیرِ اطلاعات پنجاب نے کہا کہ ہم انسان ہیں، فرشتے نہیں، ہم سے بھی غلطیاں اور کوتاہیاں ہونگی لیکن کوشش ہو گی جرائم نہ ہو۔ کوتاہی، غلطی یا کوئی گناہ ہو گیا تو کوشش ہو گی کہ دوبارہ ایسا نہ ہو، ہم گڈ گورننس اور پرفارمنس کے ذریعے قائد کا پاکستان بنائیں گے، خادمِ اعلیٰ کی طرح ٹوپی پہن کر بڑھکیں نہیں ماریں گے، عمران خان نے جو ذمہ داری ہمیں دی ہے اسے پورا کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ صحافیوں کے جائز مطالبات کو حل کریں گے۔ رائٹ ٹو انفارمیشن بل پنجاب میں پاس کیا گیا لیکن عملدرآمد نہیں ہوا، ہم خیبر پختونخوا کی طرح رائٹ ٹو انفارمیشن بل پر عملدرآمد کروائیں گے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ 55 روپے فی کلومیٹر ہیلی کاپٹر کا سوال فواد چودھری سے پوچھیں۔ فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ ہمارا پہلا اور آخری مقصد صرف مخلوقِ خدا کی خدمت ہے، پنجاب میں پولیس، واسا، صحت اور تعلیم کے شعبوں میں بہتری لائیں گے۔ پچھلے دس سالوں میں پنجاب کی عوام کا استحصال کیا گیا، سابق حکومت نے گڈ گورننس کے غلاف تلے بیڈ گورننس کا طوفان مچایا۔ پنجاب میں ثقافتی سرگرمیوں کو فروغ دیا جائے گا۔


ای پیپر