فوٹوبشکریہ فیس بک

جمال خشوگی قتل کیس، ترک صدر کا مشتبہ افراد کو ترکی کے حوالے کرنے کا مطالبہ
27 اکتوبر 2018 (17:33) 2018-10-27

ریاض: جمال خشوگی قتل کیس کی گتھیایاں سلجھ نہ پائیں، سعودی وزیر خارجہ نے کہا کہ خشوگی کیس اعصابی تناو بن چکا ہے اس لیے تحقیقات میں بھی وقت لگے گا، تاہم قتل میں ملوث ملزمان پر مقدمہ سعودی عرب میں ہی چلایا جائے گا جبکہ ترک صدر رجب طیب اردوان نے مشتبہ افراد کو ترکی کے حوالے کرنے کا مطالبہ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق صحافی جمال خشوگی کے قتل کی تحقیقات کیلئے سعودی عرب نے مزید وقت مانگ لیا۔ وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا کہ ترک ہم منصبوں کیساتھ کام کررہے ہیں جس کے نتائج جلد سامنے آئیں گے۔

ترک صدر نے اعلان کیا ہے کہ وہ سعودی عرب سے تحریری درخواست کریں گے کہ جمال خشوگی کے قتل میں ملوث 18 افراد کو ترکی کے حوالے کیا جائے۔ تاکہ ہم مجرموں کے خلاف کارروائی اور تحقیقات کرسکیں جبکہ جمال خشوگی کی منگیتر نے اپنے ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ امریکی صدر کی جانب سے اُنھیں واشنگٹن آنے کی دعوت انسانی ہمدردی حاصل کرنے کا ہتھ کنڈا ہے۔

 

 

 

 


ای پیپر