High Court,IHC,state,not,protecting,common man,Athar Minallah,justice
27 نومبر 2020 (21:15) 2020-11-27

اسلام آباد :ہائیکورٹ نے کہا ہے کہ ریاست کی طرف سے عام شہری کا تحفظ نہیں ہو رہا بلکہ صرف ایلیٹ کلاس کی ہی خدمت کی جا رہی ہے۔ریاست کو چاہیے کہ صرف شہریوں کی حفاظت کرے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے اسلام آباد میں نئی ہائوسنگ سوسائٹیوں میں شہریوں کو معاوضوں کی عدم ادائیگی کیس کی سماعت کرتے ہوئے ریمارکس دئیے کہ شہریوں کو انصاف کی فراہمی کے راستے میں رکاوٹیں حائل ہیں ٗ اگر شہری انصاف کی تلاش میں نکلتے ہیں کہ تکنیکی رکاوٹیں سے ان کیلئے الجھنیں پیدا کی جاتی ہیں اور وہ ہمت ہار کر بیٹھ جانے میں عافیت سمجھتے ہیں۔اگر حکام ان عام شہریوں کی جگہ خود کو رکھ کر سوچیں تو انہیں معلوم ہو کر جن لوگوں کو اپنی ہی زمینوں سے بے دخل کر دیا جاتا ہے ان پر کیا گزرتی ہے۔

چیف جسٹس نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ریمارکس دئیے کہ اگر آپ کے گائوں کی ساری زمین پر حکومت زبردستی قابض  ہو جاتی ہے اور آپ کو ڈی سی ریٹ پر ادائیگی کر دی جائے تو حکام کو کیسا محسوس ہو؟۔اگر کسی کی ذاتی زمین کو سرکاری تحویل میں لینا مقصود ہے کہ اس کیلئے بین الاقوامی قوانین موجود ہیں۔ یہ انسانی حقوق کا بنیادی ایشو ہے ۔ ہمارے لئے وہ اہم ہیں جن کی زمینوں پر قبضہ کیا گیا ہے۔ 


ای پیپر