کرتارپور راہداری سے 12 کروڑ سکھوں کو خوشی نصیب ہوئی : نوجوت سنگھ سدھو
27 نومبر 2018 (15:19) 2018-11-27

لاہور:سابق بھارتی کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو نے کہا ہے کہ 71سال کی جو امید تھی وہ آج پوری ہو گئی ، کرتارپور راہداری سے 12کروڑ سکھوں کو خوشی نصیب ہوئی ، مذہب کو سیاست اور دہشت گردی کے چشمے سے نہیں دیکھنا چاہیے، حلف برداری تقریب سے آنے پر تنقید کرنے والوں کو معاف کرتا ہوں،دنیا میں کوئی ایسا مذہب یا قانون نہیں جو کسی کو عبادت سے روکے،پاکستان اور بھارت کے درمیان کرکٹ میچز ہونے چاہئیں۔

نوجوت سنگھ سدھو نے واہگہ بارڈر پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’’خوشیاں ہی خوشیاں ہوں دامن میں جس کے کیوں نہ خوشی سے وہ پاگل ہو جائے‘‘ وزیراعظم عمران خان نے جو بیج بویا وہ آج پودا بن گیا ہے، 3ماہ پہلے وعدے کی تکمیل آج ہوئی ، میرے دوست عمران خان کا شکریہ ادا کرتا ہوں، نفرتیں محبت میں تبدیل ہو سکتی ہیں، مذہب کو سیاست کے روپ میں نہیں دیکھنا چاہیے، کرتارپور راہداری سے 12کروڑ سکھوں کو خوشی نصیب ہوئی ، مذہب کو سیاست اور دہشت گردی کے چشمے سے نہیں دیکھنا چاہیے، 71سال کی جو امید تھی وہ آج پوری ہو گئی ہے۔

 انہوں نے کہا پاکستانی وزیراعظم، حکومت عوام کا شکریہ ادا کرتا ہوں، کرتارپور راہداری سے 73سال کی آس بھر آئی ہے، دنیا میں کوئی ایسا مذہب یا قانون نہیں جو کسی کو عبادت سے روکے، میں نصرت فتح علی خان کے گانے سنتا ہوں، میں عمران خان کا بچپن سے فین ہوں، پاکستان اور بھارت کے درمیان کرکٹ میچز ضرور ہونے چاہئیں، فنکاروں کو دونوں ممالک میں جا کر کام کرنا چاہیے، فنکاروں کو دونوں ممالک میں جا کر کام کرنا چاہیے۔

 فنکاروں کے ذریعے دونوں ممالک کے تعلقات کی بہتری اچھی ہے، کرتارپور راہداری سکھ برادری کیلئے دیوانگی سے کم نہیں، مجھے کسی بڑے لیڈروں نے نہیں روکا سب نے تائید کی۔ نوجوت سنگھ سدھو نے اس موقع پر ایک شعر بھی پڑھا، گورونانک کے بول ہمیشہ یاد رکھیں گے، شیخ فرید کی نصیحت ہمیشہ یاد رکھیں گے، مریدوں کو جو مرشد کی طرف لے جائے، ہم اس امید کی کل بنیاد رکھیں گے۔


ای پیپر