file photo

چین کے ہاتھوں ہزیمت کے بعد مودی کی کورونا پالیسی بھی ناکامی کا شکار
27 May 2020 (16:06) 2020-05-27

نیو دہلی: لداخ پر چین کے ہاتھوں ہزیمت کے بعد مودی کی کورونا پالیسی بھی ناکامی کا شکار، نیویارک ٹائمز نے مودی کا پول کھول دیا۔

رپورٹ کے مطابق سخت لاک ڈاؤن کے باوجود بھارت میں کورونا کیسز اور اموات زیادہ ہیں، بھارتی حکومت اپنی عوام کا اعتماد کھونے لگی، بھارتی عوام کہتی ہے رہنما فیصلوں کی تعداد نہیں، ان کے اثرات سے جانے جاتے ہیں، پاکستان میں بھارت کے مقابلے میں کیسز کم ہیں۔

مودی کی چالاکیاں اور نالائقیاں دنیا بھر میں بے نقاب ہوئی ہیں۔ بھارت میں 60 فیصد کیسز صرف ممبئی، دہلی، احمد آباد، چنائے اور پونے سے ہیں۔ ممبئی اور چنائے اپنے بیشتر صحت وسائل گنوا بیٹھے، ممبئی میں سب سے زیادہ 20 فیصد کورونا کیسز سامنے آئے۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ جنوبی ایشیاء میں لاک ڈاؤن ہی نہیں، دیگر عوامل بھی اہم تھے، جنہیں مودی نے نظر انداز کیا۔ مودی کی پالیسیوں نے لوگوں کو بھوک، افلاس سے مار دیا، بیشتر غریب لوگ اس پالیسی کا شکار ہوئے۔ بھارت میں غریب کی کمر ٹوٹ کر رہ گئی، ہر غریب اور بے بس ورکر جو کہ تپتے سورج اور بھوک سے نڈھال تھا اُس کے لبوں پر صرف ایک بات تھی۔ خُدا پر بھروسہ۔ یہ دراصل بد اعتمادی ہے مودی حکومت پر، لاک ڈاؤن سے صرف متوسط طبقہ ہی فائدہ اُٹھا سکا۔ ثابت ہو گیا کہ مودی کا ہندوستان صرف امیروں کے لئے ہے۔ بھارت کا ذات پات کا نظام واضح ہو گیا۔ کس طرح چھوٹی کاسٹ اور اقلیتوں کو عالمی وبا میں بے یارو مددگار چھوڑ دیا گیا۔


ای پیپر