PMIK,Imran Khan,PTI,Pakistan Politics,Marryam Nawaz,PMLN,Bilawal Bhutto,Latest News,PDM,Zardari
27 مارچ 2021 (20:36) 2021-03-27

لاہور :پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ ن میں سخت جملوں کے تبادلے کے بعد مولانا فضل الرحمن اور سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کے درمیان ٹیلی فونک گفتگو ہوئی ،جس میں نوازشریف نے مولانا فضل الرحمن کو انتہائی سخت لہجے میں یہ کہہ کر چپ کر وا دیا کہ آپ آصف زرداری کی وکالت نہ کریں ۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی کے ایک پروگرام میںصحافی نے دعویٰ کیا کہ مولانا فضل الرحمن اور نواز شریف کے درمیان مستقبل کے لائحہ عمل سے متعلق تفصیلی تبادلہ خیال ہوا لیکن دونوں رہنمائوں کے درمیان اس وقت ماحول نا خوشگوار ہو گیا جب نواز شریف نے مولانا فضل الرحمن کو یہ کہہ کر چپ کروا دیا کہ آپ آصف زرداری کی وکالت نہ کریں ۔

نجی ٹی وی ذرائع کے مطابق سینٹ الیکشن میں اپوزیشن لیڈر کے انتخاب پر نواز شریف نے مولانا فضل الرحمن سے گلہ کرتے ہوئے کہا کہ ایک دفعہ پھر پیپلزپارٹی نے ہمارے ساتھ دھوکہ کر دیا ہے ،نواز شریف نے کہا کہ میں پہلے بھی کہا تھا کہ یہ لوگ ہمیں دھوکہ دے دینگے ،سینٹ الیکشن اپوزیشن لیڈر کیلئے پیپلزپارٹی نے ہمارے ساتھ ہاتھ کیا ہے ،اور یہ پہلی دفعہ نہیں ہوا اس طرح کے واقعات پہلے بھی کئی دفعہ ہو چکے ہیں ۔

میاں نواز شریف نے مولانا فضل الرحمن سے گلہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ ہمیشہ آصف زرداری کی گارنٹی دیتے تھے کہ پیپلزپارٹی ہمارے ساتھ ہوگی ،مولانا فضل الرحمن نے نوازشریف کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ میاں صاحب پیپلزپارٹی کیساتھ چلنا ہماری مجبوری ہے ،اور ہمیں سب کو ایک دوسرے کیساتھ لے کر چلنا ہے ،اگر ایسا نہیں کرینگے تو حکومت پر پریشر نہیں بڑھا سکتے ،جس پرسابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا کہ بس بہت ہو چکا،ہمیں معلوم ہے کہ ہمیں کیا کرناہے ،آپ آصف زرداری کی وکالت نہ کریں ۔

واضح رہے اس سے قبل  پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے شریک چیئرمین و سابق صدر آصف زرداری کے درمیان ٹیلی فونک رابطہ ہواتھا جس میں دوران دونوں رہنمائوں نے پی ڈی ایم اتحاد برقرار رکھنے پر اتفاق کیا تھا ، دونوں رہنماؤں نے اختلافی امور طے کرنے کیلئے بھی مشاورت جاری رکھنے پر اتفاق کیا،ذرائع کا کہنا ہے کہ فضل الرحمان نے اختلافی امور کو اوپن نہ کرنے کی بھی درخواست کی۔


ای پیپر