Fourth conference of speakers of parliaments ends in Turkey
27 مارچ 2021 (15:53) 2021-03-27

 اسلام آباد :ترکی میں ہونے والی چوتھی سپیکرز کانفرنس نے کشمیر کے تنازع سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق حل کرنے پر اتفاق کرتے ہوئے کہا ہے کہ تمام ریاستوں کو فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کی سیاست سے گریز کرنا چاہیے،پاکستان کیخلاف ہونے والے فیصلوں میں  ایف اے ٹی ایف پر یکجا موقف اپنایا جائے گا۔

 جار ی اعلامیہ کے مطابق ترکی میں ہونے والی چوتھی سپیکر کانفرنس اختتام کو پہنچ گئی ، پاکستان کی نمائندگی کرتے ہوئے سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کانفرنس میں ‘‘دہشتگردی کے خلاف جنگ اور علاقائی رابطے کو مضبوط’’ کرنے اور اس سے نمٹنے کیلئے مل کر جدو جہد کرنے پر زور دیا ۔

سپیکر قومی اسمبلی نے کہا کہ بھارتی افواج مظلوم اور نہتے کشمیری عوام پر ظلم کر رہی ہے،عالمی برادری کو اس کیخلاف ایکشن لینا چاہیے ،انہوں نے کہا اسلامو فوبیا کی وجہ سے امت مسلمہ کو سیکیورٹی کے خطرات لاحق ہیں،  پاکستان پر دہشتگردی کے الزام لگانے والوں کو اس بات کا علم ہونا چاہیے کہ پاکستان ہی واحد ملک ہے جس نے دہشتگردی کے خلاف جنگ میں سب سے زیادہ قربانیاں دی ہیں۔

کانفرنس کے اختتامی اعلامیے میں کہا گیا کہ عالمی اور علاقائی امن کیلئے مسئلہ کشمیر کا حل ناگزیر ہے،ترقی پذیر ممالک کے عوام کے لیے کووڈ 19 ویکسین کی با آسانی دستیابی انتہائی ضروری ہے اور ویکسین کی کمزور طبقات تک رسائی یقینی بنائی جائے۔اسپیکر کانفرنس میں افغانستان، چین ایران ،عراق اور پاکستان کے پارلیمانی وفود نے شرکت کی۔اسپیکر کا کانفرنس کے اختتام کے بعد اسد قیصر نے مولانا جلال الدین رومی اور حضرت شمس تبریزی کے مزار پر بھی حاضری دی۔


ای پیپر