Indian media, farmers, social media, UN rights envoy, Michelle Bachelet
27 فروری 2021 (14:23) 2021-02-27

نیویارک: اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کی سربراہ مشیل بیچلیٹ کا کہنا ہے کہ بھارتی میڈیا کی جانب سے بھارتی کسانوں کو سوشل میڈیا پر اظہار رائے سے روکنے کی کوشش کی گئی ہے ۔

اقوام متحدہ میں انسانی حقوق کی سربراہ 'مشیل بیچلیٹ' نے کسانوں کے احتجاج پر بھارتی میڈیا اور صحافیوں کو لے کر افسوس کو اظہار کیا ہے ۔ ان کا کہنا ہے کہ بھارتی میڈیا کی جانب سے کسانوں کے احتجاج پر تبصرے کرنے کی بجائے ان پر بغاوت کے الزامات لگائے گئے ہیں ۔

کسانوں کو سوشل میڈیا پر اپنے اظہارے رائے سے روکا گیا ہے اور یہ عمل انسانی حقوق کے قواعد کے خلاف ہے ۔ اس کے علاوہ انہوں نے مقبوضہ کشمیر پر پابندیوں پر بھی تشویش کا اظہار کیا ہے ۔

خیال رہے کہ بھارتی کسانوں اور سکھوں کا احتجاج ہر گزرتے دن کیساتھ انتہائی خطرناک صورتحال اختیار کرتا چلا جا رہا ہے ، بھارت میں 4 ماہ سے جاری کسانوں کے احتجاج میں اُس وقت شدت آئی جب ہریانہ میں کسانوں نے گندم کی تیار فصلیں تلف کرنا شروع کر دیں ۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ بھارتی کسانوں کی طرف سے تیار فصلوں کے جلائے جانے کے بعد مہنگائی کا ایک نیا طوفان آجائے گا ، جو بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کیلئے کنٹرول کرنا انتہائی مشکل ہو جائے گا ۔

دوسری طرف سکھ برادری نے بھی مودی سرکار کیلئے خطرے کی گھنٹی بجا دی ہے ، سکھ برادری کا کہنا تھا کہ سکھ خود کو اب بھارتی شہری نہ کہیں ، خالصہ تحریک کے رہنمائوں نے بھارت میں موجود سکھ برادری سے اپیل کرنا شروع کر دی ہے کیونکہ خالصہ تحریک کے رہنمائوں کا کہنا ہے کہ اب خود کو بھارتی شہری کہنا مودی کو سپورٹ کرنا ہے ۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق لاکھوں کی تعداد میں مظاہرین دہلی کے باہر موجود ہیں ، مختلف علاقوں میں جلسے بھی جاری ہیں ، لیکن مودی سرکار بھی اپنی ہٹ دھرمی پر اڑی ہوئی ہے ۔


ای پیپر