Image Source : Twitter

بھارتی جارحیت کے بعد پاکستانی ہائی کمان کی ان کیمرہ بریفنگ
27 فروری 2019 (23:33) 2019-02-27

اسلام آباد : بھارتی جارحیت پر پارلیمانی رہنماﺅں کو اِن کیمرہ بریفنگ دی گئی، ڈی جی آئی ایس پی آر اور وزیرِ خارجہ شاہ محمود نے شرکاءکو بریفنگ دی۔تفصیلات کے مطابق پارلیمانی رہنماﺅں کے اِن کیمرہ اجلاس میں پارلیمانی رہنماﺅں اور عسکری حکام نے شرکت کی، اجلاس کے شرکا کو بھارتی جارحیت اور پاکستان کے ردِ عمل پر بریفنگ دی گئی۔

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ بھی اجلاس میں شریک ہوئے، اپوزیشن لیڈر شہباز شریف، آصف زرداری، چیئرمین سینیٹ، اسپیکر قومی اسمبلی و دیگر رہنما بھی اجلاس میں شریک ہوئے۔ بریفنگ میں کہاگیا کہ خطے میں کشیدگی افغان امن عمل کو بھی متاثرکر سکتی ہے، پاکستان کے پڑوسیوں کے بارے میں کوئی جارحانہ عزائم نہیں۔پارلیمانی رہنماﺅں کو بریفنگ میں کہا گیا کہ واضح پالیسی ہے ہماری سرزمین کسی کے خلاف استعمال نہیں ہو گی، بھارت ٹھوس شواہد دیتا تو پورے خلوص سے کارروائی کرتے، بھارت نے فضائی حدود کی خلاف ورزی کر کے جارحیت کا ارتکاب کیا، جوابی کارروائی کرنا پیشہ ورانہ ذمہ داری بن گئی تھی۔

مزید کہا گیا کہ خطے میں کشیدگی افغان امن عمل کو بھی متاثرکر سکتی ہے، پاکستان کے پڑوسیوں کے بارے میں کوئی جارحانہ عزائم نہیں، بھارت کو باور کرایا ہم جوابی کارروائی کی پوری صلاحیت رکھتے ہیں۔وزیرِ خارجہ نے پارلیمانی رہنماں کو بھارتی دراندازی کے معاملے، نیشنل کمانڈ اتھارٹی کے اجلاس میں کیے جانے والے فیصلوں، دوست ممالک کے ساتھ ہونے والے رابطوں پر بریفنگ دی۔

وزیر خارجہ نے اجلاس میں کہا کہ بھارت کے جنگی جنون اور ہٹ دھرمی پر عالمی برادری کو اعتماد میں لیا، بین الاقوامی برادری کا مثبت جواب مل رہا ہے، دوست ممالک سے مسلسل رابطے میں ہیں، بھارت کو بھی امن کا واضح پیغام دیا گیا ہے۔


ای پیپر