بھارت کسی بھی قسم کی بات چیت کیلئے تیار نہیں: پاکستان
27 دسمبر 2018 (17:30) 2018-12-27

اسلام آباد:ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا ہے کہ بھارت کسی بھی قسم کی بات چیت کیلئے تیار ہی نہیں ، بات چیت نہیں ہو رہی تو اسکردو کیل روڈ کیسے کھول سکتے ہیں، پاکستان ویانا کنونشن کا احترام کرتا ہے، پاکستان میں بھارتی سفارت کار پوری آزادی سے کام کر رہے ہیں، پا کستان مقبو ضہ کشمیر کیلئے آواز اٹھا تا ر ہے گا۔

ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے ہفتہ وار بریفنگ کے دوران بتایا کہ وزیر اعظم عمران خان نے سعودی عرب کے 2 کامیاب دورے کیے، وزیر اعظم نے چین کا بھی انتہائی کامیاب دورہ کیا۔3 ماہ میں وزیر خارجہ نے کئی مما لک کے دورے کیے اور کئی وزرائے خارجہ پاکستان آئے، بھارت کے ساتھ مذاکرات کے لیے بھی کوشش کی گئی، کشمیر سمیت تمام معاملات پر بات کرنے کی کوشش کی ، اسی سلسلے میں وزیر اعظم عمران خان نے خط لکھا،کرتار پور راہداری کے پاکستانی اقدام کو دنیا بھر میں سراہا گیا۔

انہوں نے کہا کہ بھارت کسی بھی قسم کی بات چیت کے لیے تیار ہی نہیں ، بات چیت نہیں ہو رہی تو اسکردو کیل روڈ کیسے کھول سکتے ہیں،341 پاکستانی قیدی بھارتی جیلوں میں ہیں، سزا پوری کرنے والے قیدی 45 ہیں جن میں 12 سول اور 33 ماہی گیر ہیں، سزا پوری کرنے والے قیدیوں کی واپسی کے لیے اقدامات اٹھا رہے ہیں اور اس کے لیے پاکستانی ہائی کمیشن نے بھارت میں قانونی ٹیم کی مدد حاصل کرنے کے لیے رابطہ کیا ہے۔دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ وزیر خا رجہ ش اہ محمود قر یشی کے حا لیہ 4 ملکی دورے کا مقصد ہمسایہ ممالک سے تعلقات بہتر بنانا ہے، وزیر خارجہ نے حالیہ دوروں میں خطے میں تعاون کی بات کی ، روسی وزیر خارجہ نے افغان مفاہمتی عمل میں پاکستان کا کردار سراہا ہے،

انہو ں نے مز ید بتا یا کہ بھارتی سفارتی عملے کو ہراساں کرنے کے الزامات بے بنیاد ہیں، پاکستان ویانا کنونشن کا احترام کرتا ہے، پاکستان میں بھارتی سفارت کار پوری آزادی سے کام کر رہے ہیں،چینی سفارتخانے کی جانب جانے والے راستوں کی بندش سے متعلق پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ کہ انہیں اس معاملے کا علم نہیں ، اس معاملے کو دیکھ کر اس پر مزید کوئی اقدام اٹھایا جا سکتا ہے،انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کا معاملہ ایک اہم مقصد ہے جس کے لیے پاکستان آواز اٹھاتا رہے گا۔


ای پیپر