Source : INP

آصف زرداری کی گرفتار ی سے متعلق بڑی خبر
27 دسمبر 2018 (16:44) 2018-12-27

اسلام آباد :حکومت نے اب تک کا سب سے بڑا فیصلہ کر تے ہوئے منی لانڈرنگ میں ملوث افراد کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا اعلان کر دیا ،سب سے بڑھ کر اس میں آصف علی زرداری کا نام بھی شامل ہے ۔

فواد چوہدری نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ یہ پرا نا پاکستان نہیں ،پائی پائی کا حساب دینا ہو گا ،ان لوگوں نے منی لانڈرنگ کیلئے حکومتی عہدوں کا استعمال کیا ،جے آئی ٹی رپورٹ کے مطابق منی لانڈرنگ کیلئے حکومتی ذرائع کا بھر پور استعمال کیا گیا ،یہ لوگ عوام کا لوٹا ہوا مال بچانے کیلئے اسی عوام کو اب سڑکوں پر لانے کی بات کر رہے ہیں تاکہ اس عوام کے لوٹے ہوئے مال کو ان سے واپس نہ لیا جائے ،یہ احتساب کا عمل اب کسی صورت ختم نہیں ہوگا ،لوٹ مار بچانے کیلئے احتجاج کا سہارا لینا چاہتے ہیں،صحافی کے سوال پر کیا آصف زرداری گرفتار ہونے جا رہے ہیں کہ جواب میں فواد چوہدری نے کہا انشاءاﷲ۔۔

بانی متحدہ کی اشتعال انگیز تقاریر کی بات کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ اس معاملہ کو برطانوی حکومت کیساتھ اٹھائینگے ،ہمیں اس بات پر تشویش ہے کہ برطانوی حکومت نے اس پر کوئی ایکشن نہیں لیا ، کابینہ کے اجلاس میں کراچی کی صورتحال پر غور کیا گیا ہے۔کراچی کا امن معیشت سے جڑا ہے۔ فواد چودھری نے کہا کہ کراچی میں فورسز نے امن قائم کرنے کیلئے بڑی قربانیاں دی ہیں۔

ہم کراچی کے امن کو خراب کرنے کی کوشش نہیں کرنے دیں گے۔متحدہ کے سابق سربراہ کی تقاریر،برطانیہ میں بیٹھ کرلوگوں کو قتل کرنے کے احکامات دیے جس پر برطانیہ کی حکومت نے تاحال کوئی ایکشن نہیں لیا۔فواد چوہدری نے کہا ہے کہ بانی ایم کیو ایم الطاف حسین نے جس طرح سے برطانیہ میں بیٹھ کر لوگوں کے قتل کے احکامات جاری کیے ان معاملات کو برطانوی حکومت کے ساتھ اٹھایا جائے گا۔

جب کہ وزیراعظم نے ہدایت کی ہے کہ کراچی میں جنوبی افریقہ کا گروہ سرگرم ہے لہذا یہ معاملہ جنوبی افریقہ کی حکومت کے سامنے بھی اٹھایا جائے گا،ان حکومتوں کو توجہ دلائی جائے گی کہ کس طرح ان کی زمین جرائم کے لیے استعمال ہو رہی ہے۔خیال رہے ایک رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ ایم کیو ایم کے سابق رکن قومی اسمبلی و رہنما علی رضا عابدی کے قتل کے تانے بانے بانی ایم کیو ایم الطاف حسین سے جا ملے ہیں۔ ذرائع کے مطابق بانی ایم کیو ایم نے کچھ روز قبل ہی سوشل میڈیا پر ایک اشتعال انگیز ویڈیو پیغام جاری کیا تھا۔


ای پیپر