Tayyip Erdogan, US President, statement, Armenia, Azerbaijan
27 اپریل 2021 (12:28) 2021-04-27

انقرہ : ترک صدر طیب اردوان نے امریکی صدر جوبائیڈن کی جانب سے آرمینیا کی لڑائی کو نسل کشی قرار دینے کا بیان واپس لینے کا مطالبہ کر دیا ۔

کابینہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے طیب اردوان نے کہا کہ امریکی صدر نے واقعے کے بارے میں بے بنیاد ، غیر منصفانہ اور غیر حقیقی بیان دیا جس سے ترکی اور امریکا کے تعلقات میں فرق پڑ سکتا ہے ۔ ترک صدر نے امریکا کو اپنا ماضی یاد رکھنے اور نامناسب بیان کو جلد از جلد واپس لینے کا مطالبہ کیا ۔

واضح رہے کہ امریکی صدر جوبائیڈن نے کہا تھا وہ یہ تسلیم کرتے ہیں کہ 1915 میں سلطنت عثمانیہ کے فوجیوں نے آرمینیا میں قتل عام کیا تھا ۔ امریکی صدر کے بیان پر واشنگٹن میں ترکی اور آذربائیجان کے شہریوں نے احتجاجی مظاہرہ کیا ۔

ادھر ، ترک وزارت خارجہ کی جانب سے امریکی صدر کے بیان پر شدید ردعمل دیتے ہوئے انقرہ میں امریکی سفیر کو طلب کرکے شدید احتجاج ریکارڈ کرایا گیا ۔

ترک وزارت خارجہ کے مطابق امریکی سفیر پر واضح کیا گیا کہ بائیڈن کے بیان کی کوئی قانونی بنیاد نہیں ، بیان کی وجہ سے تعلقات میں ایسا گھاؤ آیا ہے جس کا بھرنا مشکل ہوگا ۔


ای پیپر