بھارت کے 44 بینک منی لانڈرنگ میں ملوث نکلے
26 ستمبر 2020 (18:51) 2020-09-26

ممبئی : بھارت کے 44 بینک منی لانڈرنگ میں ملوث نکلے۔منی لانڈرنگ کا یہ پیسہ منشیات ٗ دہشت گردی اور مالی بے ضابطگیوں میں استعمال کیا گیا۔

بھارتی فنانشل کرائمز انفورسمنٹ کی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ منی لانڈرنگ میں بھارتی نوادرات کے سمگلرز بھی ملوث ہیں۔آئی پی ایل میں بھی منی لانڈرنگ کا پیسہ استعمال کیا گیا۔2011 سے  2017 تک 6 سال کے دوران بھارتی بینکز نے 5.3 ارب کی منی لانڈرنگ کی۔بھارتی بینکوں کی بیرون ملک شاخوں کو منی لانڈرنگ کیلئے استعمال کیا گیا۔رپورٹ کے مطابق منی لانڈرنگ میں بھارتی نودرات کے اسمگلر بھی ملوث ہیں جبکہ سونے اور ڈائمنڈ کی بھی منی لانڈرنگ میں استعمال کاانکشاف ہوا ہے ، یہ رقم آئی پی ایل میں بھی استعمال ہونے کا دعو ی کیا گیا ہے ۔

ان بینکوں میں بھارت کاپنجاب نیشنل بینک،کوٹک مہاندرا،ایچ ڈی ایف سی بینک ، کنارہ بینک،انڈس لینڈبینک، بینک آف بروڈا شامل ہیں، بھارتی بینکوں نے 3201غیر قانونی ٹرانزیکشنز سے 1.53بلین ڈالر منی لانڈرنگ کی۔کیرالہ اورآسام میں دہشتگردگروپس کی نشاندہی کی گئی ہے، اب یہ یہ پیسہ کہاں گیا،کس نے استعمال کیا،سوال اٹھ گئے کہ کیا یہ رقم ایسے گروپس کی معاونت کے لیے استعمال ہورہی ہے؟


ای پیپر